ہندوستانی ملوں کے فضلے سے پاکستان کو شدید خطرات ،شہریوں کی صحت، زرعی نقصان کے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
- مزید خبریں

کراچی

تلاش کیجئے

ہندوستانی ملوں کے فضلے سے پاکستان کو شدید خطرات ،شہریوں کی صحت، زرعی نقصان کے علاوہ ایوی ایشن انڈسڑی کو 2 ارب روپے سالانہ کا نقصان ،موسمی تبدیلیوں کی وجہ سے متاثر ہ ملکوں میں پاکستان 10ویں نمبرپر میٹرولوجیکل ڈیپارٹمنٹ

کراچی( اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 16فروری۔2015ء ) ہندوستان کی کوئلے سے چلنے والی اسٹیل ملز سے پیدا ہونے والی زہریلی دھند سے پاکستانی شہریوں کی صحت، زرعی نقصان کے علاوہ ملک کی ایوی ایشن انڈسڑی کو 2 ارب روپے سالانہ کا نقصان ہورہا ہے۔میٹرولوجیکل ڈپارٹمنٹ کے نائب ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر غلام رسول کا گذشتہ روز ہونے والی ایک پریس بریفنگ کے دوران کہنا تھا کہ گذشتہ سال انٹر گورمنٹل پینل آن کلائیمیٹ چینج (آئی پی سی سی) کی پیش کی گئی رپورٹ میں پاکستان میں آئندہ سالوں میں موسمی تبدیلیوں کے حوالے سے ملک بھر کے سائنسدانوں نے اپنی اپنی تفصیلی معلومات پیش کی۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان ان ممالک میں 10ویں نمبر ہے جو موسمی تبدیلیوں کی وجہ سے متاثر ہونگے جبکہ کسی بھی قسم کی تبدیلی ہم پر اثر انداز ہوسکتی ہے۔سمندری پانی کے بڑھاوں کے حوالے سے غلام رسول کا کہنا تھا کہ پاکستان کے ساحل گذشتہ سالوں کے قابلے میں سمندری طوفانوں کی زد

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

16-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان