امریکی شہری کا آئی ایس آئی دفتر حملے میں ’معاونت‘کا اقرار،2009 میں آئی ایس آئی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
تاریخ اشاعت: 2015-02-16
پچھلی خبریں -

تلاش کیجئے

امریکی شہری کا آئی ایس آئی دفتر حملے میں ’معاونت‘کا اقرار،2009 میں آئی ایس آئی دفتر پر حملے میں 30 افراد ہلا ک اور 300 زخمی ہوگئے تھے ، امریکی اٹارنی جنرل

واشنگٹن ( اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 16فروری۔2015ء ) پاکستانی نژاد امریکی شہری نے 2009 میں لاہور میں انٹر سروسزانٹیلی جنس (آئی ایس آئی) دفتر پر حملے میں دہشت گردوں کی معاونت کا قرار کرلیا۔پورٹ لینڈ میں قائم امریکی اٹارنی جنرل کے دفتر کی جانب سے جاری کئے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ 51 سالہ ریاض قادر خان نے دوران تفتیش اقرار کرلیا ہے کہ اس نے لاہور میں آئی ایس آئی حملے میں ملوث حملہ آواروں کو آلات اور مالی مدد فراہم کی تھی۔

مذکورہ حملے میں آئی ایس آئی کے ملازمیں سمیت 30 افراد ہلاک اور 300 سے زائد زخمی ہوگئے تھے جبکہ ریاض قادر سے رابطے میں موجود اہم حملہ آور ابو جلیل بھی اس خود کش حملے کے دوران ہلاک ہوگیا تھا۔ریاض قادر نے این ای ڈی سے گریجویشن اور امریکی یونیورسٹی سے انجینئیرنگ میں ماسٹرز کی ڈگری حاصل کی ہے، وہ پورٹ لینڈ میں پانی کو صفائی کرنے والے پلانٹ پر کام کرتے ہیں۔عدالت کی دستاویزات کے مطابق قادر خان نے ابو جلیل اور دو دیگر لوگوں کو جنھوں

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

16-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان