افتخار چوہدری ہتک عزت دعویٰ، بابر اعوان دعوے کی دستاویزات نہ ملنے کے باعث جواب ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار فروری

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-15
تاریخ اشاعت: 2015-02-15
تاریخ اشاعت: 2015-02-15
تاریخ اشاعت: 2015-02-15
تاریخ اشاعت: 2015-02-15
تاریخ اشاعت: 2015-02-15
تاریخ اشاعت: 2015-02-15
تاریخ اشاعت: 2015-02-15
پچھلی خبریں -

اسلام آباد

تلاش کیجئے

افتخار چوہدری ہتک عزت دعویٰ، بابر اعوان دعوے کی دستاویزات نہ ملنے کے باعث جواب داخل نہ کرسکے،قانونی طور پر نقول حاصل کی جاسکتی ہیں،عدالت، افتخار چوہدری نے عام سی عدالت میں خود کو پیش کرکے دکھادیا کہ وہ قانون کی بالادستی پر یقین رکھتے ہیں،احسن الدین کی میڈیا سے بات چیت، جب جرح شروع ہوگی تو بہت سی باتیں کھلیں گی،بابر اعوان کی با ت چیت

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 15فروری۔2015ء) سیشن جج محمد تنویر میر کی عدالت میں سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی جانب سے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کیخلاف 20 روپے ہرجانہ کیس میں عمران خان کے وکیل بابر اعوان جواب داخل نہ کرسکے۔ بابر نے عدالت سے کہا کہ ہمیں ہرجانہ دعویٰ کی دستاویزات کی نقول نہیں مل سکیں اسلئے جواب دعویٰ داخل نہیں کراسکتے جس پر فاضل جج نے کہا کہ آپ قانونی طریقہ کار پر عمل کرتے ہوئے درخواست دے کر دستاویزات کی نقول حاصل کرسکتے ہیں لیکن جو غیر مصدقہ دستاویزات ہیں ان کا صرف معائنہ کرسکتے ہیں۔

سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری کے وکیل احسن الدین شیخ نے عدالت سے گذارش کی کہ کیس کا فیصلہ 90 دن کے اندر اندر کیا جائے۔ انہوں نے ڈاکٹر بابر اعوان کیخلاف ضابطہ اخلاق کے تحت چار اعتراضات بھی دائر کئے جس میں توہین عدالت پر سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری کا بابر اعوان کیخلاف نوٹس‘ بے نظیر بھٹو کے پولیٹیکل سیکرٹری چوہدری اسلم کی ایف آئی آر اور رحمن ملک کو ملزم قرار دینا‘ نندی پور پراجیکٹ میں خواجہ آصف کی سپریم کورٹ میں دائر پٹیشن اور حارث سٹیل ملز سکینڈل شامل ہیں۔



اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

15-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان