مصری عدالت نے الجزیرہ کے دو صحافیوں کو ضمانت پر رہا کردیا، صحافیوں پر جھوٹی خبریں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ فروری

مزید بین الاقوامی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
-

تلاش کیجئے

مصری عدالت نے الجزیرہ کے دو صحافیوں کو ضمانت پر رہا کردیا، صحافیوں پر جھوٹی خبریں پھیلانے اور کالعدم تنظیم اخوان المسلمین کی مدد کرنے کے الزامات تھے

قاہر ہ (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 13فروری۔2015ء) ایک مصری عدالت نے الجزیرہ چینل کے دو صحافیوں کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم جاری کیا ہے۔ ان صحافیوں پر جھوٹی خبریں پھیلانے اور کالعدم تنظیم اخوان المسلمین کی مدد کرنے کے الزامات عائد کیے گئے تھے۔مصر میں گذشتہ سال جون میں الجزیرہ چینل کے دو صحافیوں محمد فہمی اور باہر محمد کو سات اور دس سال کی قید کی سزا سنائی گئی تھی۔مصر کی اپیل کورٹ نے گذشتہ ماہ ان صحافیوں کے خلاف مقدمے کی دوبارہ سماعت شروع کرنے کا حکم جاری کیا تھا۔

اپیل کورٹ کا کہنا تھا کہ محمد فہمی اور باہر محمد کے خلاف ابتدائی فیصلہ شواہد کی روشنی میں ثابت نہیں ہوتا۔مصر کی کورٹ آف کیسیشن کے نائب سربراہ جج انور گیبرے نے پیر کو کہا کہ استغاثہ ان صحافیوں کے خلاف کالعدم تنظیم اخوان المسلمین کی مدد کرنے کے الزامات ثابت کرنے میں ناکام رہا ہے۔جج کے مطابق یہ مقدمہ اس دعوے کی تفتیش کرنے میں بھی ناکام رہا ہے کہ ملزموں نے جبر کے تحت بیان دیا تھا۔قاہرہ میں بی بی سی کا کہنا ہے صحافیوں کے خاندانوں کو اس بات کی تشویش ہے کہ مقدمے کی سماعت منصفانہ نہیں ہو گی۔

الجزیرہ چینل سے تعلق رکھنے والے تیسرے صحافی پیٹر گریسٹا کو گذشتہ ہفتے رہا کر دیا تھا محمد فہمی کے رشتے داروں نے اس مقدمے کی دوبارہ سماعت کو ایک بھیانک خواب سے تعمیر کیا ہے۔دوسری جانب کینیڈا کے حکام نے محمد

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

13-02-2015 :تاریخ اشاعت