سندھ ایپیکس کمیٹی کا اجلاس،64مقدمات کو وفاقی حکومت کے ذریعے ملٹری کورٹس میں بھیجنے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
تاریخ اشاعت: 2015-02-13
پچھلی خبریں -

کراچی

تلاش کیجئے

سندھ ایپیکس کمیٹی کا اجلاس،64مقدمات کو وفاقی حکومت کے ذریعے ملٹری کورٹس میں بھیجنے کی منظوری دیدی گئی ،صوبے کے تمام مدارس کی ازسر نو رجسٹریشن، دہشتگردی سے نبردآزما ہونے کیلئے سندھ اور بلوچستان کی بین الصوبائی کمیٹی کا مشترکہ اجلاس طلب کیا جائے گا،شرجیل میمن کی میڈیاسے گفتگو

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 13فروری۔2015ء) سندھ کے وزیراطلاعات و بلدیات شرجیل انعام میمن نے کہا ہے کہ جمعرات کو وزیر اعلیٰ سندھ کی زیر صدارت ایپیکس کمیٹی کے اجلاس میں 64مقدمات کو وفاقی حکومت کے ذریعے ملٹری کورٹس میں بھیجنے کی منظوری دے دی گئی ہے۔ صوبے کے تمام مدارس کی ازسر نو رجسٹریشن کی جاے گی جبکہ دہشتگردی سے نبردآزما ہونے کے لئے سندھ اور بلوچستان کی بین الصوبائی کمیٹی کا مشترکہ اجلاس طلب کیا جائے گا۔

جمعرات کو وزیر اعلیٰ ہاؤس کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے شرجیل انعام میمن نے کہا کہ اجلاس میں صوبے کے تمام اہم کیسز کا بغور جائزہ لیا گیا اور فیصلہ کیا گیا ہے کہ 74اہم کیسز کو وفاقی وزارت داخلہ کو بھیجا جائے گا اور ان کے توسط سے یہ کیسز ملٹری کورٹس میں بھیجے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایپیکس کی صوبائی کمیٹیوں کو براہ راست ملٹری کورٹس میں کیسز بھیجنے کا اختیار نہیں ہے بلکہ تمام کیسز وفاقی وزارت داخلہ کو بھیجیں جائیں گے اور وفاقی وزارت داخلہ ان کیسز کو ملٹری کورٹس میں بھئجے گی۔

انہوں نے کہا کہ اجلاس میں مدارس کی ازسر نو رجسٹریشن کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ پولیس کے ایک ہزار نوجوانوں

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

13-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان