کشکول کو ضرور توڑیں گے تا کہ آئندہ کشکول اٹھانے کی نوبت نہ آئے، نواز شریف،ملک ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-12
تاریخ اشاعت: 2015-02-12
تاریخ اشاعت: 2015-02-12
تاریخ اشاعت: 2015-02-12
تاریخ اشاعت: 2015-02-12
تاریخ اشاعت: 2015-02-12
پچھلی خبریں -

چنیوٹ

تلاش کیجئے

کشکول کو ضرور توڑیں گے تا کہ آئندہ کشکول اٹھانے کی نوبت نہ آئے، نواز شریف،ملک سے ہمیشہ کے لئے دہشت گردی کا خاتمہ کر دیں گے،لوڈشیڈنگ ،گیس اور دیگر مسائل ہمارے دورے میں ختم ہو جائیں گے ،پاکستان کو خوشحال اور ترقی یافتہ ملک بنائیں گے، ملک میں انفراسٹرکچر اور موٹروے کا جال بچھا ئیں گے،اللہ تعالیٰ نے پاکستان کو سونا ،تانبا،لوہا جیسی معدنیات سے مالامال کیا ہے،سرمایہ کار معدنیات نکالنے میں سرمایہ کاری کریں ، حکومت تمام تر سہولیات فراہم کرے گی ،پاکستان کو بہت سے مسائل کا سامنا ہے ،اقتدار کو چیلنج سمجھ کر قبول کیا،، ہمت ہارنے والا شخص نہیں ہوں ،ہمارے دورے میں سارے مسائل حل ہو جائیں گے، ،وزیر اعظم کا چینوٹ کے علاقے رجوعہ میں تقریب سے خطاب،وزیر اعظم نے دریافت ہونے والے قیمتی ذخائر کا معائنہ کیا ، ڈاکثرثمر مبارکباد نے اس اہم کامیابی پر وزیر اعظم کو بریفنگ دی

چینیوٹ(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 12فروری۔2015ء)وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ ملک سے دہشت گردی ،سکیورٹی اور بجلی وگیس کا بحران حل کرنا اولین ترجیح ہے ،ملک سے ہمیشہ کے لئے دہشت گردی کا خاتمہ کر دیں گے،لوڈشیڈنگ ،گیس اور دیگر مسائل ہمارے دورے میں ختم ہو جائیں گے ،پاکستان کو خوشحال اور ترقی یافتہ ملک بنائیں گے، ملک میں انفراسٹرکچر اور موٹروے کا جال بچھا ئیں گے ،پوری دنیا کے سرمایہ کاروں کو دعوت دیتا ہوں کہ یہاں سرمایہ لگائیں،اللہ تعالی نے پاکستان کو لوہے اور تانپے جیسی معدنیات سے مالا مال کیا ہے ،سرمایہ کار رجوعہ میں معدنیات نکالنے میں سرمایہ کاری کریں ،سرمایہ کاروں کو حکومت تمام تر سہولیات فراہم کرے گی ۔

بدھ کے روز چینیوٹ کے علاقے رجوعہ وزیر اعظم نوازشریف بذریعہ ہیلی کاپٹر پہنچے ،وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے ان کا استقبال کیا ،ارکان اسمبلی بھی وزیر اعظم کے ہمراہ تھے جبکہ ایٹمی سائنسدان ڈاکٹر ثمر مبارک ،چینی اور جرمن حکام بھی موجود تھے ۔وزیر اعظم نے دریافت ہونے والے قیمتی ذخائر کا معائنہ کیا اور ڈاکثرثمر مبارکباد نے اس اہم کامیابی پر وزیر اعظم کو بریفنگ دی ۔ڈاکٹر ثمر مبارک نے وزیر اعظم کو بتایا کہ ذخائر کے نمونوں کو سوئزرلینڈ میں ایس جی ایس لیب لیبارٹری بھجوائے گئے جہاں ان نمونوں کے ٹیسٹوں سے پتہ چلا کہ یہاں بڑی مقدار میں لوہے اور تانبے کے ذخائر موجود ہیں ۔

انہوں نے مزید بتایا کہ ان نمونوں کو کینیڈا کی عالمی لیباٹری سے بھی ٹیسٹ کروائے گئے ہیں ۔ذخائر کی دریافت ڈرلنگ کا آغاز 2جولائی 2014 میں شروع کیا گیا جبکہچین اورجرمن کی کمپنیوں نے اس منصوبے میں حصہ لیا اور تھوڑے ہی عرصہ میں بہت بڑی کامیابی حاصل کی گئی ۔وزیر اعظم نواز شریف نے دریافت ہونے والے لوہے اور تانبے کے نمونے دیکھے اور ان کے بارے میں معلومات حاصل کیں جس کے بعد وزیر اعظم نے منصوبے میں جاری کاموں کا بھی معائنہ کیا ۔

اس موقع پر وزیر اعظم کو چینی اور جرمن ماہرین کا تعارف کرایا گیا اور وزیر اعظم نے فرداً فرداً مصافحہ کیا ۔جرمن اور چینی ماہرین نے وزیر اعظم کو منصوبے پر مزید تفصیلی بریفنگ دی ۔ ڈائریکٹر جرگن ہرنیش نے وزیر اعظم کو بتایا کہ ذخائر انتہائی کم گہرائی میں پائے گئے ہیں ،28 کلو مربع کلو میٹر کے علاقے میں یہ ذخائر پھیلے ہوئے جبکہ سروے کے مطابق200 مربع کلو میٹر کے علاقے میں لوہے اور تانبے کے ذخائر کے موجودگی کے قوی امکانات ہیں ۔

انہوں نے مزید بتایا کہ علاقے میں لوہے کی نسبت تانبے کثیر تعداد میں موجود ہیں جبکہ علاقے میں سونے کے ذخائر بھی پائے گئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ عالمی مارکیٹ میں تانبا 5 ہزار اور خام لوہے کی 100 ڈالر قیمت ہے ۔انہوں نے کہا کہ چین اور جرمن کمپنیاں منصوبے کی تکمیل کیلئے اپنی تمام تر صلاحیتیں بروئے کار لارہی ہیں ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ اللہ تعالی نے پاکستان کو لوہے اور تانپے جیسی معدنیات سے مالا مال کیا ہے ،سرمایہ کار رجوعہ میں معدنیات نکالنے میں سرمایہ کاری کریں ،سرمایہ کاروں کو حکومت تمام تر سہولیات فراہم کرے گی ،آج اگر علاقے کی عوام یہاں ہوتے اور جلسہ ہوتا تو خوشی ہوتی لیکن یہاں سکیورٹی صورت حال کا مسئلہ ہے ۔

مجھے آج یہاں آنے سے روکا گیا کہ سکیورٹی خدشات ہیں لیکن میں پھر بھی یہاں آیا ہوں ۔انشاء اللہ سکیورٹی کا مسئلہ جلد حل ہو جائے گا اس لئے ضرب عضب اور قومی ایکشن پلان شروع کیا ہے انشاء اللہ جلد ملک سے دہشت گردی کا خاتمہ ہو جائے گا ۔پاکستان کو بہت سے مسائل کا سامنا ہے ،ہسپتالوں میں مریض رل رہے ہیں ،مریضوں کے پاس ادویات کے لئے پیسے نہیں ہے ،غربت بہت زیادہ ہے، بے روزگاری بہت ہے ،ملک میں انفراسٹرکچر کا نظام نہیں ہے سڑکیں بھی نہیں ہیں ،ملک میں چوری چکاری اتنی زیادہ ہے کہ ان کو ٹھیک کرنے میں وقت لگے گا،سر پکڑ کر بیٹھے ہوتے ہیں کہ ان مسائل کو کیسے حل کریں ،جس اینٹ کو اٹھاتے ہیں اسی اینٹ کے نیچے گند نکلتا ہے ۔

آج یوسف رضا گیلانی سے ملاقات ہوئی جس میں انہوں نے کہا کہ دنیا کا مشکل ترین کام پاکستان کا وزیر اعظم بننا ہے ۔میں نے چیلنج سمجھ کر اقتدار کو سنبھالا ہے ۔عوام نے ہمیں مینڈیٹ دیا ہے اور اللہ تعالی کا حکم تھا کہ اس لئے ہم نے یہ چیلنج قبول کیا ہے۔مجھے امید ہے کہ پاکستان کے حالات ٹھیک ہو جائیں گے اور یہ حالات ہمارے دورے میں ہی ٹھیک ہو جائیں گے ۔انہوں نے کہا کہ میں ہمت ہارنے والا شخص نہیں ہوں ۔

شہباز شریف

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

12-02-2015 :تاریخ اشاعت