این اے 122 دھاندلی کیس ،الیکشن کمیشن ٹربیونل لاہور نے ایاز صادق کا بیان ریکارڈ ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-08
تاریخ اشاعت: 2015-02-08
تاریخ اشاعت: 2015-02-08
تاریخ اشاعت: 2015-02-08
تاریخ اشاعت: 2015-02-08
تاریخ اشاعت: 2015-02-08
تاریخ اشاعت: 2015-02-08
تاریخ اشاعت: 2015-02-08
تاریخ اشاعت: 2015-02-08
تاریخ اشاعت: 2015-02-08
تاریخ اشاعت: 2015-02-08
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

تلاش کیجئے

این اے 122 دھاندلی کیس ،الیکشن کمیشن ٹربیونل لاہور نے ایاز صادق کا بیان ریکارڈ کر لیا ، مزیدکا رروائی 14فروری تک ملتوی، فریقین کے وکلاء کو حتمی بحث کے لیے طلب کر لیا

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 8فروری۔2015ء)الیکشن کمیشن ٹربیونل لاہور نے حلقہ این اے 122قومی اسمبلی دھاندلی کیس میں سردار ایاز صادق کا بیان ریکارڈ کرنے کے بعد مزیدکا رروائی 14فروری تک ملتوی کرتے ہوئے فریقین کے وکلاء کو حتمی بحث کے لیے طلب کر لیا ہے ۔ گذشتہ روز وکلاء کے دلائل کے لیے سہ پہر ایک بجے کا وقت دیا گیا قبل ازیں مسلم لیگ ن اور پی ٹی آئی کے ورکروں کی جانب سے اپنے اپنے حق میں شدید نعرے بازی کی گئی مسلم لیگ ن کے ورکر اتنے جذباتی ہو گئے کہ گو عمران گو کے نعرے لگانے کی بجائے ”گو نواز گو “ کے نعرے لگا دیئے جس پر ورکروں کے سمجھانے پر اپنے نعرہ تبدیل کر دیے مسلم لیگ ن کے ورکروں کی بھاری تعداد الیکشن کمیشن کے دفتر کے باہر جمع ہو گئی اور مسلم لیگ ن کے حق میں نعرے لگائے اس موقع پر مسلم لیگ ن کی خواتین وکلاء کی بھی اکثریت موجو دتھی ۔

مسلم لیگ ن کی خواتین ورکروں میں شازیہ جو پہلے گو نواز گو کے نعرے لگا رہی تھی اس کے پوچھا گیا تو اس نے جواب دیا ہے کہ وہ میں نہیں تھی بلکہ میرے پیچھے کھڑے پی ٹی آئی کے ورکروں نے کیا ہے اس نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی قومی اسمبلی کے سپیکر ایاز صادق کے لیے ہماری جان بھی حاضر ہے وہ حلقہ کے ووٹ لے کر کامیاب ہوئے ہیں دوبار جانچ پڑتال کے بعد بھی ایاز صادق جیت گئے ہیں انہوں نے کہا کہ اب عمران خان کو چاہئے کہ وہ پاکستانی ہونے کا ثبوت دیں اور مسلم لیگ ن کو حکومت کرنے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

08-02-2015 :تاریخ اشاعت