دنیا بھر میں اس وقت 750 ملین غریب افراد صاف پانی کی فراہمی سے محروم ہیں،عالمی بینک، ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
ہفتہ فروری

تلاش کیجئے

دنیا بھر میں اس وقت 750 ملین غریب افراد صاف پانی کی فراہمی سے محروم ہیں،عالمی بینک، پانی فراہم کرنے کی مہم پر کی جانے والی سرمایا کاری کے فوائد توقعات سے کہیں زیادہ ثابت ہوں گے

واشنگٹن (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 7فروری۔2015ء ) عالمی بینک نے صاف پانی اور حفظان صحت کے لیے سرمایہ کاری پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ دنیا بھر میں اس وقت 750 ملین غریب افراد صاف پانی کی فراہمی سے محروم ہیں، ان افراد کے لیے پینے کا صاف پانی فراہم کرنے کی مہم پر کی جانے والی سرمایا کاری کے فوائد توقعات سے کہیں زیادہ ثابت ہوں گے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق ورلڈ بینک کی جانب سے جاری تازہ اعداد وشمار میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی کو صحت عامہ کے شعبے میں واضح بہتری کی ضمانت قرار دیا اور کہا کہ اس کے متوازن ایک اور مہم غیر ممولی اہمیت کی حامل ہے اور وہ ہے،’ حفظان صحت کو بہتر بنانے کی مہم‘۔

خاص طور سے دنیا کی دوسری بڑی آبادی بھارت کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف سے عوام کو ٹوائلیٹس کی فراہمی کو قومی پالیسی کی ترجیح بنانے کے بھی بہت فائدہ مند اور مْثبت نتائج سامنے آئیں گے۔ یہاں تک کہا گیا ہے کہ پبلک ٹوائلیٹس کی سہولت فراہم کر کہ بھارت میں ’ انسانی وقار‘ کو بہتر بنانے میں مدد ملے گی۔ورلڈ بینک کے پانی اور حفظان صحت سے متعلق پروگرام کے سینئر ماہر اقتصادیات ’ گئی ہوٹن‘ نے اس بارے میں ایک رپورٹ میں تحریر کیا ہے، ” پینے کے صاف پانی اور حفظان صحت کی سہولیات کی فراہمی ایک اچھی سرمایا کاری ہوگی۔

2030 ء تک پینے کے صاف پانی کی بنیادی سہولت تک عالمگیر رسائی کو ہر گھر کے لیے ممکن بنانے کے پراجیکٹ پر 14 بلین ڈالر سالانہ اخراجات آئیں گے جبکہ اس سے 52 بلین ڈالر کا فائدہ حاصل ہوگا۔ اس کا مطلب یہ ہوا کہ صاف پانی کی فراہمی کو ممکن بنانے کے لیے خرچ کیے جانے والے ہر ڈالر کے بدلے میں 4 ڈالر کا منافع ہوگا۔ یہ ابتدائی اندازے ہیں، جن کی بنیاد پر ایک وسیع تر مطالعاتی رپورٹ تیار کی جائے گی۔

07-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان