کراچی، بلدیہ ٹاوٴن فیکٹری آتشزدگی کیس میں 30 ماہ بعد سنسنی خیز انکشافات ، 20 کروڑ ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
ہفتہ فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-07
تاریخ اشاعت: 2015-02-07
تاریخ اشاعت: 2015-02-07
تاریخ اشاعت: 2015-02-07
تاریخ اشاعت: 2015-02-07
تاریخ اشاعت: 2015-02-07
تاریخ اشاعت: 2015-02-07
تاریخ اشاعت: 2015-02-07
تاریخ اشاعت: 2015-02-07
تاریخ اشاعت: 2015-02-07
تاریخ اشاعت: 2015-02-07
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

تلاش کیجئے

کراچی، بلدیہ ٹاوٴن فیکٹری آتشزدگی کیس میں 30 ماہ بعد سنسنی خیز انکشافات ، 20 کروڑ روپے بھتہ نہ دینے پر فیکٹری میں آگ لگائی گئی،گرفتارملزم کی جوائنٹ انٹروگیشن رپورٹ سامنے آگئی

کراچی( اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 7فروری۔2015ء)بلدیہ ٹاوٴن فیکٹری آتشزدگی کیس میں 30 ماہ بعد سنسنی خیز انکشافات ہوئے ہیں، گرفتار ملزم کا کہنا ہے کہ 20 کروڑ روپے بھتہ نہ دینے پر فیکٹری میں آگ لگائی گئی،گرفتارملزم کی جوائنٹ انٹروگیشن رپورٹ سامنے آگئی ہے ، گرفتار ملزم کے ایم سی کا سنیٹری ورکر ہے اور اس کا تعلق سیاسی جماعت سے ہے۔بلدیہ ٹاوٴن میں ڈھائی سال قبل فیکٹری میں لگنے والی آگ نے تقریباً 250سے زائد افراد کی جان لے لی گئی، جمعہ کو سماعت کے دوران عدالت میں پیش کی گئی رپورٹ سامنے آگئی ہے ، عدالت میں سندھ رینجرز نے اپنی رپورٹ کے ساتھ گرفتار ملزم کی انٹروگیشن رپورٹ بھی پیش کی تھی۔

گرفتار ملزم رضوان قریشی نے تحقیقات کے دوران انکشاف کیا ہے کہ سانحہ بلدیہ ٹاوٴن حادثہ نہیں تھا، فیکٹری

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

07-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان