جرمن کابینہ کا ملک سے باہر جانے والے افراد کے خلاف قوانین سخت بنانے کا فیصلہ
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات فروری

تلاش کیجئے

جرمن کابینہ کا ملک سے باہر جانے والے افراد کے خلاف قوانین سخت بنانے کا فیصلہ

برلن (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔5فروری۔2015ء ) جرمن کابینہ نے شدت پسندانہ سرگرمیوں میں حصہ لینے کے لیے ملک سے باہر جانے والے افراد کے خلاف قوانین کو سخت بنانے پر اتفاق کر لیا ہے، دہشت گردی کی نیت سے سفر کرنا بھی قابل تعزیر ہو گا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق جرمن حکومت ایسے قوانین پر متفق ہو گئی ہے، جن کا مقصد جہادیوں کو بیرون ملک جانے کے لیے سفر سے روکنا ہے۔ اس سلسلے میں آج بدھ کے روز کابینہ کی جانب سے منظور کیے گئے مسودے کے مطابق آئندہ سوشل ویب سائٹس پر شام اور عراق میں سرگرم دہشت گرد تنظیم اسلامک اسٹیٹ میں شامل ہونے کا ارادہ ظاہر کرنے والوں یا دہشت گردی کی تربیت حاصل کرنے والوں کو بھی مجرم تصور کیا جائے گا۔



اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

05-02-2015 :تاریخ اشاعت