دعوے سے کہہ سکتا ہوں ایاز صادق کو اب کوئی نہیں بچا سکتا،عمران خان ،گلگت بلتستان ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-05
تاریخ اشاعت: 2015-02-05
تاریخ اشاعت: 2015-02-05
تاریخ اشاعت: 2015-02-05
تاریخ اشاعت: 2015-02-05
تاریخ اشاعت: 2015-02-05
تاریخ اشاعت: 2015-02-05
تاریخ اشاعت: 2015-02-05
تاریخ اشاعت: 2015-02-05
تاریخ اشاعت: 2015-02-05
تاریخ اشاعت: 2015-02-05
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

تلاش کیجئے

دعوے سے کہہ سکتا ہوں ایاز صادق کو اب کوئی نہیں بچا سکتا،عمران خان ،گلگت بلتستان میں نگراں وزیراعلی کی تقرری کے خلاف سپریم کورٹ جائیں گے،دھرنے کی وجہ سے دھاندلی سے متعلق رپورٹیں سامنے آ ئیں ،پرویز رشید جھوٹا درباری ہے نوازشریف کابینہ سے فارغ کریں،نئے انتخابات کے بعد اسمبلیوں میں جائیں گے،ہم سمجھتے تھے پیپلزپارٹی ہی نااہل ہے لیکن مسلم لیگ ن ادھوری دھاندلی کر کے اس سے بھی زیادہ نااہل ثابت ہوئی ہے،پریس کانفرنس سے خطاب

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔5فروری۔2015ء)پاکستان تحریک انصاف کے چےئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ الیکشن ٹریبونل کا فیصلہ سامنے آنے کے بعد سپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کو مستعفی ہونے سے کوئی نہیں بچا سکتا،گلگت بلتستان میں نگراں وزیراعلی کا تعلق مسلم لیگ (ن) سے ہے ، اس تقرری کے خلاف سپریم کورٹ جائیں گے،دھرنے کی وجہ سے دھاندلی سے متعلق رپورٹیں سامنے آ ئیں ،پرویز رشید بے شرم جھوٹا درباری ہے نوازشریف اسے کابینہ سے فارغ کریں،نئے انتخابات کے بعد اسمبلیوں میں جائیں گے،ہم سمجھتے تھے کہ پیپلزپارٹی ہی نااہل ہے لیکن مسلم لیگ ن ادھوری دھاندلی کر کے اس سے بھی زیادہ نااہل ثابت ہوئی ہے۔

بدھ کے روز تحریک انصاف کے مرکزی سیکرٹریٹ میں عمران خان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ این اے 122 میں دھاندلی کی فرانزک رپورٹ تیار کرالی اور دعوے سے کہہ سکتا ہوں کہ اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق عہدے سے فارغ ہو جائیں گے ، اب انہیں کوئی نہیں بچا سکتا۔تحریک انصاف اس وقت اسمبلیوں میں جائے گی جب دھاندلی ثابت ہوجائے گی لیکن اب نئے انتخابات کے بعد ہی اسمبلیوں میں جائیں گے کیونکہ جعلی اسمبلیوں میں جانے کا کوئی فائدہ نہیں،بہت جلد نئے انتخابات دیکھ رہا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ حامد زمان اور میرے حلقے میں دھاندلی سے متعلق رپورٹ ٹریبونل نے الیکشن کمیشن کو جمع کرادی جس میں کہا گیا ہے کہ این اے 122 کے 150 پولنگ اسٹیشنز پر ریٹرننگ افسران کے فارم 14 اور 15 پر دستخط ہی موجود نہیں جب کہ 20 پولنگ اسٹٰیشن کے فارم 19 اور 20 پر ایک ہی شخص کے دستخط

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

05-02-2015 :تاریخ اشاعت