کرسٹیانو رونالڈو کی خدمات 30 کروڑ پاوٴنڈ میں،رونالڈو کو اگر کل ریال میڈرڈ جانے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ فروری

مزید کھیلوں کی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
-

تلاش کیجئے

کرسٹیانو رونالڈو کی خدمات 30 کروڑ پاوٴنڈ میں،رونالڈو کو اگر کل ریال میڈرڈ جانے دے تو انھیں 30 کروڑ پاوٴنڈ میں خریدا جا سکتا ہے،خورخے مینڈس، پرتگالی فٹبال ٹیم کے کپتان ’اب تک کے بہترین کھلاڑی ہیں۔ وہ دنیا کے بہترین کھلاڑی ہیں اور آپ اْن کا مقابلہ کسی اور کے ساتھ نہیں کر سکتے، ایجنٹ رونالڈو،‘مینڈس نے ایک ارب پاوٴنڈ مالیت کے تبادلوں کے معاہدے کروائے ہیں، انھیں کھیل کی دنیا کی طاقتور ترین شخصیت سمجھا جاتا ہے،کرسٹیانو رونالڈو مسلسل تین بار بیلون ڈی اور یعنی سال کے بہترین فٹبال کھلاڑی کا ایوارڈ حاصل کر چکے ہیں

پرتگال(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔4فروری۔2015ء)پرتگالی فٹبال کھلاڑی کرسٹیانو رونالڈو کے ایجنٹ کا کہنا ہے کہ اْن کی خدمات کی کْل قیمت 30 کروڑ پاوٴنڈ ہے۔کرسٹیانو رونالڈو کے ایجنٹ خورخے مینڈس نے بتایا کہ رونالڈو کو اگر کل ریال میڈرڈ جانے دے تو انھیں 30 کروڑ پاوٴنڈ میں خریدا جا سکتا ہے۔خورخے مینڈس نے غیر ملکی خبررساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے پرتگالی فٹبال ٹیم کے کپتان ’اب تک کے بہترین کھلاڑی ہیں۔

وہ دنیا کے بہترین کھلاڑی ہیں اور آپ اْن کا مقابلہ کسی اور کے ساتھ نہیں کر سکتے۔‘29 سالہ رونالڈو کو اس سال مسلسل تیسری بار دنیا کے بہترین کھلاڑی کا ایوارڈ ملا جس میں انھوں نے لائنل میسی کو پیچھے چھوڑ دیا۔جب اْن سے پوچھا گیا کہ رونالڈو کی خدمات کتنے میں حاصل کی جاسکتی ہیں تو انھوں نے جواباً پوچھا: ’رونالڈو؟ ایک ارب۔ اگر انھیں خریدنے کی شرط ایک ارب ڈالر کی ہے تو (ان کی مالیت) ایک ارب ہے اور اْن جیسا ڈھونڈنا بہت مشکل ہے۔

’اگر کسی بھی وجہ سے اْن کا کلب انھیں30 کروڑ پاوٴنڈ میں بیچنے کا فیصلہ کرتا ہے تو ضرور کوئی نہ کوئی انھیں خریدنے کے لیے تیار ہو گا۔‘تاہم انھوں نے اصرار کیا کہ رونالڈو، جنھیں 2009 میں ریال میڈرڈ نے آٹھ کروڑ پاوٴنڈ میں خریدا تھا، اسی کلب کا حصہ رہیں گے، بے شک انھیں اپنے سابقہ کلب مانچسٹر یونائٹڈ کے شائقین سے محبت ہے۔جب اْن سے پوچھا گیا کہ کیا وہ اپنا کریئر وہیں ختم کریں گے؟ تو انھوں نے جواب دیا ’یقیناً، وہ ریال میڈرڈ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

04-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان