قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد کے حوالے سے خیبرپختونخوا ایپکس کمیٹی کے اجلاس میں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
پچھلی خبریں - مزید خبریں

پشاور

تلاش کیجئے

قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد کے حوالے سے خیبرپختونخوا ایپکس کمیٹی کے اجلاس میں اہم فیصلے،خود کش حملوں میں رجسٹرڈ کیسز پر کام کیا جائیگا، حملوں میں ملوث افراد کے سرپرست اور والدین ذمہ دار ہوں گے،فوج،پولیس اور حساس اداروں کے یونیفارم بیچنے پر مکمل پابندی عائدہوگی،دکانوں کے جاری ہونے والے این او سی منسوخ جبکہ صوبے بھر میں مدارس کے سروے اور مدارس کے تہہ خانے ختم کئے جائیں گے ،اجلاس میں فیصلے

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 5فروری۔2015ء)خیبر پختونخواہ میں قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد کے حوالے سے ہونے والے ایپکس کمیٹی کے گزشتہ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ خود کش حملوں میں رجسٹرڈ کیسز پر کام کیا جائے گا اور خود کش حملوں میں ملوث کی پہنچان کی جائے گی اور حملہ آوروں سرپرست،والدین ذمہ دار ٹھہرائے جائیں گے ،اس طرح دیگر واقعات میں ملوث افراد کے والدین کو ذمہ دار ٹھہرایا جائے گا جبکہ لاپتہ ہونے والے افراد اگر دہشت گردی کے واقعات میں ملوث پایا گیا تو اس کے ذمہ دار بھی والدین ہی ہوں گے۔

ایپکس کمیٹی کا اجلاس گزشتہ روز گورنر

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

04-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان