لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ،دربار سخی سرور دھماکے کے مرکزی ملزم بہرام خان کو 54بار ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

تلاش کیجئے

لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ،دربار سخی سرور دھماکے کے مرکزی ملزم بہرام خان کو 54بار سزائے موت،عدالت نے کالعدم TTPکے دہشت گرد کوعمر قید، 76بار 10،10سال قید اور 52لاکھ جرمانے کی سزا بھی سنائی،اپریل 2011میں دربارسخی سرور پر خود کش حملے میں52افراد جاں بحق، 76زخمی ہوئے تھے،ATCڈی جی خان کی جانب سے دی گئی سزا برقرار، ملزم کی اپیل خارج، ترجمان محکمہ پراسیکیوشن

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 5فروری۔2015ء)لاہور ہائی کورٹ ملتان بینچ نے دربار سخی سرور پر خودکش دھماکے کے مرکزی ملزم کالعدم تحریک طالبان کے بہرام خان عرف صوفی بابا کو 54بار سزائے موت، ایک بار عمر قید، 76بار10،10سال قید بامشقت اور 52لاکھ جرمانے کی سزا سنائی ہے۔ ملتان سپیشل ڈویژنل بینچ کے جسٹس قاضی محمد امین اور جسٹس چوہدری مشتاق احمد نے ملزم بہرام خان کی اپیل خارج کرتے ہوئے انسداد دہشت گردی عدالت ڈی جی خان کی جانب سے مارچ 2013میں دی گئی سزا کو برقرار رکھا ہے۔

ترجمان محکمہ پراسیکیوشن کے مطابق 3اپریل2011کو ڈی جی خان فورٹ منرو روڈ پر واقعہ دربار سخی سرور میں خود کش دھماکہ ہوا جس میں 52افراد جاں بحق اور 76زخمی ہوئے تھے۔ملزم بہرام خان عرف صوفی

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

04-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان