ایف آئی اے کو مضبوط اور فعال ادارے میں تبدیل کیا جائے گا‘ چوہدری نثار،ادارے کو ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
پچھلی خبریں -

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:14 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:15 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:18 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:19 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:54 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:56 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

ایف آئی اے کو مضبوط اور فعال ادارے میں تبدیل کیا جائے گا‘ چوہدری نثار،ادارے کو وزارت خزانہ کے مالیاتی مانیٹرنگ یونٹ کے اشتراک سے دہشت گردی کی لعنت کومالی معاونت فراہم کرنے کے خلاف اقدامات کرنے چاہئیں‘ اجلاس میں گفتگو

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 5فروری۔2015ء) فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) کو مضبوط اور فعال ادارے میں تبدیل کیا جائے گا جس کیلئے اس کی موجودہ کارکردگی میں خاطر خواہ تبدیلی لانے کے سلسلہ میں دستیاب وسیلہ کو بروئے کار لانے کی ضرورت ہے۔ یہ بات وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے گزشتہ روز ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ یہ اجلاس رواں سال مین ایف آئی اے کے اہداف ‘ مستقبل کے وژن اور نئے اقدامات کے سلسلہ میں ہوا۔

اجلاس میں سیکرٹری داخلہ‘ ڈی جی ایف آئی اے‘ نیکٹا کے کوارڈینیٹر‘ مختلف ایڈیشنل ڈی جیز اور ملک بھر سے ایف آئی اے کے ڈائریکٹرز کے علاوہ نادرا کے اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ اجلاس کے دوران وزیر داخلہ نے ایف آئی اے حکام کو مشتبہ لین دین پر کڑی نظر رکھنے اور حوالہ /ہنڈی کے خلاف فوری کریک ڈاؤن شروع کرنے کی ہدایت کی۔ وفاقی وزیر نے زور دیا کہ انسداد دہشت گردی کیلئے بنائے گئے قومی لائحہ عمل کے تحت ایف آئی اے کو وزارت خزانہ کے مالیاتی مانیٹرنگ یونٹ کے اشتراک سے دہشت گردی کی لعنت کو مالی رقوم کی فراہمی روکنے کیلئے اقدامات کرنے چاہئیں جیسے تمام مشتبہ اور غیر قانونی لین دین کا پتہ چلانے میں قائدانہ کردار سونپا گیا ہے۔

اس ضمن میں وفاقی وزیر کو بتایا گیا کہ قومی لائحہ عمل کی تشکیل سے لے کر اب تک ایف آئی اے کے مانیٹرنگ میکنزم کے حصہ کے طور پر ایف آئی اے نے حوالہ/ہنڈی کے 28 کیسز کا پتہ چلایا جن میں 24 ملزمان کو گرفتار کیا گیا اور 71.5 ملین روپے کی رقم برآمد کی گئی۔ اسی طرح مشتبہ لین دین کے تین اور اینٹی منی لانڈرنگ کے پانچ کیسز کا پتہ چلایا گیا۔ جن میں آٹھ ملزمان کو گرفتار کیا گیا۔ وزیر موصوف کو مزید بتایا گیا کہ وزارت داخلہ کی ہدایت پر جعلی ادویات کے خلاف مہم میں 27 جنوری 2014 ء سے لے کر اب تک ملک بھرمیں 27 چھاپے مارے گئے جن میں 20 افراد کو گرفتار کرکے کروڑوں روپے مالیتی ادویات قبضہ میں لی گئیں۔

مزید برآں گزشتہ ایک سال میں منی لاندرنگ کے 88 مقدمات درج کئے گئے جن کے تحت 270 ملزمان کو گرفتار کیا

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

04-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان