سلمان تاثیر قتل کیس،ممتاز قادری کیخلاف ایف آئی آر اور گواہان کے بیانات میں تضاد ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
تاریخ اشاعت: 2015-02-04
پچھلی خبریں -

اسلام آباد

تلاش کیجئے

سلمان تاثیر قتل کیس،ممتاز قادری کیخلاف ایف آئی آر اور گواہان کے بیانات میں تضاد ہے ،قتل کا مقدمہ بنتا ہے نہ دہشت گردی کی دفعات لگ سکتی ہیں،خواجہ شریف کے دلائل

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔ 5فروری۔2015ء) اسلام آباد ہائیکورٹ میں سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر قتل کیس کی سماعت درخواست گزار کے وکیل کے دلائل مکمل نہ ہونے پر سماعت ایک روز کیلئے ملتوی کردی۔ منگل کے روز اسلام آباد ہائیکورٹ میں سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر قتل کیس کی سماعت ہوئی۔ جسٹس نورالحق این قریشی‘ جسٹس شوکت عزیز صدیقی پر مشتمل ڈویژن بنچ نے کیس کی سماعت کی۔ درخواست گزار ممتاز قادری کی جانب سے سابق چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ خواجہ محمد شریف‘ جسٹس (ر) میاں نذیر اختر اور ایڈووکیٹ جنرل میاں عبدالرؤف وفاق کی جانب سے پیش ہوئے۔

درخواست گزار ممتاز قادری کے وکیل خواجہ محمد شریف نے عدالت میں ابتدائی دلائل دیتے ہوئے بتایا کہ کہ سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر کو سیکٹر ایف سکس میں واقع کوہسار مارکیٹ میں ایک ریسٹورنٹ سے نکلتے ہوئے ان کے ذاتی گارڈ ممتاز قادری نے سرکاری رائفل سے قتل کیا جس پر مقدمہ درج کیا گیا اور ساتھ ہی 780A کی دفعات بھی لگادی گئیں۔ انہوں نے عدالت کو بتایا کہ پولیس کی جانب سے ممتاز قادری پر 780A کی دفعہ غیرقانونی طور پر لگائی گئی ہے۔

جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دئیے کہ عدالت دونوں فریقین کا موقف سنے گی اور میرٹ پر فیصلہ کیا جائے گا۔ اللہ تعالیٰ پر یقین ہے کہ کیس کے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ آئین و قانون کے مطابق ہی ہوگا۔ خواجہ محمد شریف نے دلائل دیتے ہوئے مزید بتایا کہ ممتاز قادری کیخلاف درج کی گئی ایف آئی آر اور گواہان کے بیانات میں تضاد پایا جاتا ہے لہٰذا ان پر قتل کا مقدمہ نہیں بنتا اور نہ ہی ان پر دہشت گردی کی دفعات لگ سکتی ہیں۔

خواجہ محمد شریف نے کہاکہ ممتاز قادری کی اپیل تین سال سے ہائیکورٹ میں زیر سماعت ہے اور ابھی ایک ہفتہ قبل ہی اسے سماعت کیلئے مقرر کیا گیا ہے۔ انہوں نے عدالت سے استدعاء

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

04-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان