وفاق المدارس کے سرپرست اور عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے امیر مولانا عبدالمجید لدھیانوی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر فروری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-02
تاریخ اشاعت: 2015-02-02
تاریخ اشاعت: 2015-02-02
تاریخ اشاعت: 2015-02-02
تاریخ اشاعت: 2015-02-02
تاریخ اشاعت: 2015-02-02
تاریخ اشاعت: 2015-02-02
تاریخ اشاعت: 2015-02-02
تاریخ اشاعت: 2015-02-02
تاریخ اشاعت: 2015-02-02
تاریخ اشاعت: 2015-02-02
پچھلی خبریں - مزید خبریں

ملتان

تلاش کیجئے

وفاق المدارس کے سرپرست اور عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے امیر مولانا عبدالمجید لدھیانوی سیمینار کے دوران دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگئے،طبیعت کی خرابی کے باوجود اپنا خطاب اطمینان سے مکمل کیا،ہم حکمرانوں کے دوست ہیں مگر انہوں نے دوستوں کو دشمن سمجھنا شروع کردیا ہے‘ مولانا عبدالمجید لدھیانوی،علماء کرام مسلم لیگ کا ساتھ نہ دیتے تو پاکستان نہ بنتا‘ سیمینار سے زندگی کا آخری خطاب

ملتان(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔2فروری۔2015ء) وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے سرپرست اعلی اور عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی امیر مولانا عبدالمجید لدھیانوی اتوار کی دوپہر وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے سیمینار میں اپنے آخری خطاب کے بعد دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگئے۔ مرحوم وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے سرپرست اعلی ہونے کے علاوہ عالمی مجلس ختم نبوت کے مرکزی امیر اور کہروڑ پکا میں ایک مدرسے کے مہتمم اعلی بھی تھے۔

مرحوم نے اپنی زندگی کا آخری خطاب اتوار کی دوپہر وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے زیراہتمام وفاق کے دفتر گارڈن ٹاؤن ملتان میں واقع ان کی قیادت میں ”مدارس و مساجد کا تحفظ اور ہماری ذمہ داریاں“ کے حوالے سے منعقد ہونے والے سیمینار میں کیا۔ مرحوم نے اپنے خطاب کے دوران بھی اپنی ناسازی طبع کا ظہار کیا تاہم علماء کرام کی موجودگی کے پیش نظر مرحوم نے اپنی ناسازی طبع کو پس پشت ڈال کر اپنا خطاب مکمل کیا۔

اس موقع پر موجود سینکڑوں علماء جوکہ جنوبی پنجاب کے مختلف شہروں سے وہاں جمع ہوئے تھے‘ نے مرحوم کا آخری خطاب سنا اور بعدازاں ان کے انتقال کی خبر سن کر شدید غم اور دکھ میں مبتلاء ہوگئے۔ مرحوم کو دل کا دورہ پڑنے کے دوران فوری طور پر طبی امداد کیلئے کارڈیالوجی ہسپتال ملتان لے جایا گیا تاہم وہ جانبر نہ ہوسکے اور انتقال کرگئے۔قبل ازیں وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے سرپرست اعلی اور عالمی مجلس ختم نبوت کے مرکزی امیر مولانا عبدالمجید لدھیانوی نے کہا ہے کہ علماء کرام مسلم لیگ کا ساتھ نہ دیتے تو پاکستان وجود میں نہ آتا‘ ہم حکمرانوں کے دوست ہیں دشمن نہیں لیکن حکمرانوں نے دوستوں کو دشمن اور دشمنوں کو دوست سمجھنا شروع کردیا ہے۔

اتوار کو یہاں وفاق المدارس کے مرکزی دفتر میں منعقدہ سیمینار سے اپنی زندگی کا آخری خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جو اپنے عہد کی پابندی نہیں کرتا وہ دین دار نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اپنے وفادار ہونے کا حکمرانوں کو یقین دلاتے ہیں۔ ہم پر اعتماد کرلو ہم دشمن نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکمران دشمنوں کے کہنے پر دوستوں سے عہد و پیماں توڑ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ علماء نے تو پاکستان بنایا۔

اگر علماء مسلم لیگ کا ساتھ نہ دیتے تو پاکستان نہ بنتا۔ حکمران اس بات کا جائزہ لیں کہ معاہدہ کس نے توڑا۔ ملک میں کرپشن کا راج ہے۔ حکمرانوں نے باہر خزانے بھر لئے ہیں اور حکمرانوں کی لغت میں دیانتداری کا لفظ موجود نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکمران سوچیں کہ پاکستان کو برباد کرنے میں حکمرانوں کا کردار ہے یا علماء کا‘ ہم پاکستان کے دشمن نہیں وفادار ہیں۔ اسلام کے نام پر ملک بنا تھا۔ حکمران مدارس کی مخالفت کرکے اپنی جڑیں کاٹ رہے ہیں۔

حکمران مسلمان بن جائیں اور مدارس اسلام کا قلعہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسلام گھروں اور بازاروں سے نکل چکا ہے اور اب مدارس میں موجود ہے۔ اسلام کو

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

02-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان