فضل الرحمن ،احمد لدھیانوی ملاقات، مجلس علمائے اسلام کا اجلاس جلد بلائے جانے کافیصلہ، ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار فروری

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-02-01
تاریخ اشاعت: 2015-02-01
تاریخ اشاعت: 2015-02-01
تاریخ اشاعت: 2015-02-01
تاریخ اشاعت: 2015-02-01
تاریخ اشاعت: 2015-02-01
تاریخ اشاعت: 2015-02-01
تاریخ اشاعت: 2015-02-01
تاریخ اشاعت: 2015-02-01
تاریخ اشاعت: 2015-02-01
تاریخ اشاعت: 2015-02-01
-

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:14 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:15 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:18 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:19 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:54 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:56 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

فضل الرحمن ،احمد لدھیانوی ملاقات، مجلس علمائے اسلام کا اجلاس جلد بلائے جانے کافیصلہ، مذہبی طبقہ کو نظر بابند کرکے غیر آئینی طریقے سے پریشان کیا جارہاہے جوقابل تشویش ہے ،سربراہ جے یو آئی(ف) ، مذہبی طبقہ کے ساتھ امتیازی سلوک پر تشویش ہے،زیادتیاں بڑھتی ہیں تو بدامنی جنم لیتی ہے،پاکستان کے اسلامی تشخص پر آنچ نہیں آنے دینگے،سربراہ اہل سنت والجماعت

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔1فروری۔2015ء)مولانافضل الرحمن اور مولانا احمد لدھیانوی کی اہم ملاقات، دیوبندی اتحاد مجلس علمائے اسلام کا اجلاس جلد بلائے جانے کافیصلہ،مولانافضل الرحمن نے کہاہے کہ ایکشن پلان کی آڑ میں مذہبی طبقہ کو نظر بابند کرکے غیر آئینی طریقے سے پریشان کیا جارہاہے جو کہ قابل تشویش ہے جبکہ احمد لدھیانوی نے کہاہے کہ مذہبی طبقہ کے ساتھ امتیازی سلوک پر تشویش ہے،زیادتیاں بڑھتی ہیں تو بدامنی جنم لیتی ہے،پاکستان کے اسلامی تشخص پر آنچ نہیں آنے دیں گے۔

جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب اہل سنت والجماعت کے سربراہ مولانا محمد احمد لدھیانوی نے جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانافضل الرحمن سے ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔ اس موقع پر جے یو آئی (ف) کے مرکزی سیکرٹری جنرل مولانا عبدالغفور حیدری بھی موجود تھے ۔ ملاقات میں ملک کی مجموعی امن وامان و سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیاگیا اور دونوں رہنماؤں نے مذہبی طبقہ کے خلاف ملک بھر میں جاری کریک ڈاؤن اور امتیازی سلوک پر گہری تشویش

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

01-02-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان