وفاقی حکومت نے قومی تعلیمی پالیسی مرتب کرلی،دسمبر2015ء تک حتمی شکل دیدی جائیگی، ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
ہفتہ جنوری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-01-31
تاریخ اشاعت: 2015-01-31
تاریخ اشاعت: 2015-01-31
تاریخ اشاعت: 2015-01-31
تاریخ اشاعت: 2015-01-31
تاریخ اشاعت: 2015-01-31
تاریخ اشاعت: 2015-01-31
تاریخ اشاعت: 2015-01-31
تاریخ اشاعت: 2015-01-31
تاریخ اشاعت: 2015-01-31
تاریخ اشاعت: 2015-01-31
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:36 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:38 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:39 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 10:35:10 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:41 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:41 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

وفاقی حکومت نے قومی تعلیمی پالیسی مرتب کرلی،دسمبر2015ء تک حتمی شکل دیدی جائیگی، قومی نصاب کونسل سیکرٹریٹ تیار، پلاننگ ڈویژن نے فنڈز بھی جاری کردیئے، 10فیصد تعلیمی اداروں کو ٹیکنیکل ، 10فیصد کو ترکی امام حاتم ماڈل میں تبدیل کرنیکا فیصلہ کرلیا،بین الصوبائی تعلیمی کانفرنس کا احوال، ذرائع، کوئی قوم تعلیم کے بغیر ترقی نہیں کرسکتی، فنی تعلیم و تربیت کی شر ح 15فیصدتک،ملک میں دینی و دنیوی تعلیم کے یکساں مواقع فراہم کئے جائینگے، معیاری و یکساں تعلیمی نصاب کیلئے بھی اقدامات اٹھائینگے، وزیر مملکت بلیغ الرحمن کا کانفرنس سے خطاب

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔31جنوری۔2015ء)وفاقی حکومت نے قومی تعلیمی پالیسی مرتب کرلی،دسمبر2015ء تک حتمی شکل دیدی جائیگی، قومی نصاب کونسل سیکرٹریٹ تیار، پلاننگ ڈویژن نے فنڈز بھی جاری کردیئے، ملک کے 10فیصد تعلیمی اداروں کو ٹیکنیکل انسٹی ٹیوشن ، 10فیصد کو ترکی امام حاتم ماڈل سکول میں تبدیل کرنے کا بھی فیصلہ کرلیا، وزیر مملکت بلیغ الرحمن نے کہاہے کہ کوئی قوم تعلیم کے بغیر ترقی نہیں کرسکتی، فنی تعلیم و تربیت کی شر ح 15فیصدتک لے کر جائینگے ،ملک میں دینی و دنیوی تعلیم کے یکساں مواقع فراہم کئے جائینگے، معیاری و یکساں تعلیمی نصاب کیلئے بھی اقدامات اٹھائینگے۔

جمعہ کے روزاسلام آباد بین الصوبائی وزراء کانفرنس کا انعقاد کیاگیا ۔ اجلاس میں چاروں صوبوں بشمول آزاد جموں و کشمیر وگلگت بلتستان کے وزرائے تعلیم اور دیگر متعلقہ ادارو ں کو مدعو کیاگیا تھا۔ ان کیمرہ ایجوکیشن کانفرنس صبح 9 بجے سے سہ پہر 3بجے تک جاری ر ہی۔ ذرائع نے ”خبر رساں ادارے “ کو بتایا کہ کانفرنس میں بلوچستان اور صوبہ خیبرپختونخواہ کے صوبائی وزرائے تعلیم نے شرکت کی جبکہ سندھ اور پنجاب کے وزراء تعلیم نہیں آئے البتہ دونوں صوبائی حکومتوں کے نمائندوں نے شرکت کی۔

کانفرنس میں قومی تعلیمی پالیسی پر غور کیاگیا۔ ذرائع کے مطابق وزیرمملکت تعلیم و تربیت میاں بلیغ الرحمن نے شرکاء کو آگاہ کرتے ہوئے کہاکہ قومی تعلیمی پالیسی مرتب کرلی گئی ہے جسے صوبوں کی مشاورت کے بعد دسمبر 2015 ء تک حتمی شکل دیدی جائیگی۔ انہوں نے بتایا کہ ملک میں فنی تعلیم کی ترویج اور اسے بڑھانے کیلئے موجودہ سکولوں میں سے10فیصد تعلیمی اداروں کو ٹیکنیکل ٹریننگ انسٹی ٹیوٹیشن میں تبدیل کردیا جائیگا کیونکہ اس وقت پاکستان میں صرف 5فیصد فنی تعلیم و تربیت دی جارہی ہے جبکہ ترقی یافتہ ممالک میں یہ شرح 14فیصد تک ہے اس اقدام سے پاکستان میں فنی تعلیم و تربیت کی شرح 15فیصد تک بڑھ جائیگی اور روزگار کے مواقع بڑھیں گے اور ہنر مند پاکستان بننے میں ممدومعاون ثابت ہونگے۔

انہوں نے دینی تعلیم کو بھی اہم

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

31-01-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان