پٹرولیم بحران کا ذمہ دار میں خود ہوں،استعفیٰ لینا وزیراعظم کا اختیار ہے،وزیر ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات جنوری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-01-29
تاریخ اشاعت: 2015-01-29
تاریخ اشاعت: 2015-01-29
تاریخ اشاعت: 2015-01-29
تاریخ اشاعت: 2015-01-29
تاریخ اشاعت: 2015-01-29
تاریخ اشاعت: 2015-01-29
تاریخ اشاعت: 2015-01-29
پچھلی خبریں -

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:36 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:38 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:39 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 10:35:10 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:41 وقت اشاعت: 17/01/2017 - 11:10:41 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

پٹرولیم بحران کا ذمہ دار میں خود ہوں،استعفیٰ لینا وزیراعظم کا اختیار ہے،وزیر پٹرولیم،بحران کا پہلے سے اندازہ لگانا ممکن نہ تھا، وزیرپٹرولیم پر ایم کیو ایم کی تنقیدپر کمیٹی میں ہنگامہ، ارکان نے ایک دوسرے پر الزامات کی بوچھاڑ کردی،بحران کی ذمہ داری ایک دوسرے پر ڈالنے پر وزارت پٹرولیم اور اوگرا کے حکام کی تلخ کلامی،ارکان نے بحران کی تحقیقات کے لئے اعلیٰ سطحی کمیٹی قائم کرنے کا مطالبہ کردیا

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔29جنوری۔2015ء)قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے پٹرولیم و قدرتی وسائل کے اجلاس میں ملک میں جاری پٹرول بحران پر وزیرپٹرولیم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ پٹرولیم بحران کا ذمہ دار میں خود ہوں،اس بحران کے بارے میں پہلے سے منصوبہ بندی کرنا ممکن نہیں تھا،وزیراعظم کسی بھی وقت مجھ سے وزارت سے استعفیٰ لے سکتے ہیں،اس کا اختیار وزیراعظم کو ہے،میرا بحران سے کوئی تعلق نہیں،بحران کا پہلے سے اندازہ لگانا ممکن نہ تھا، وزیرپٹرولیم پر ایم کیو ایم کی تنقید کرنے پر کمیٹی میں ہنگامہ ہوااور ارکان نے ایک دوسرے پر الزامات کی بوچھاڑ کردی،بحران کی ذمہ داری ایک دوسرے پر ڈالنے پر وزارت پٹرولیم اور اوگرا کے حکام کی تلخ کلامی ہوئی،ارکان نے بحران کی تحقیقات کے لئے اعلیٰ سطحی کمیٹی قائم کرنے کا مطالبہ کردیا۔

کمیٹی کا اجلاس بدھ کو یہاں بلال ورک کی صدارت میں ہوا جس میں پٹرولیم بحران کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ اس دوران وزیرپٹرولیم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ائیربلیو میں بحران آیا تھا میں نے اسے اس وقت منظم کیاجب 152 افراد مارے گئے تھے۔انہوں نے کہا کہ پٹرول بحران کی پہلے سے پیشگوئی کوئی نہیں کرسکتا،کراچی میں پٹرول بحران ایک شرارت سے پیدا ہوا،ایم کیو ایم اس شرارت کا کھوج لگائے۔چےئرمین اوگرا نے کہا کہ پٹرول بحران کی ذمہ دار اوگرا نہیں ہے،سیکرٹری پٹرولیم ارشد مرزا نے کہا کہ بحران کا ذمہ دار اوگرا ہے دونوں نے ایک دوسرے پر ذمہ داری ڈالی۔

پٹرول سٹوریج کی مانیٹرنگ کرنا اوگرا کی ذمہ داری ہےِ سیکرٹری پٹرولیم کے بیان پر اوگرا چےئرمین نے ہنگامہ کھڑا کردیا،ناصر خٹک نے کہا کہ اگربحران کا اندازہ نہیں لگایا جا سکتا تو پھر افسران کو معطل کیوں کیا جاتا ہے۔وزیر پٹرولیم نے کہا کہ کمیٹیاں تحقیقات کر رہی ہیں،حقیقت جلد سامنے آجائے گی،مستقبل میں یہ بحران پیدا نہیں ہوگا،ایم این اے ساجد نے پوچھا کہ پی ایس او خسارہ میں کیوں جارہا ہے،وزیر نے کہا کہ پی ایس او خسارہ میں نہیں ہے،اس کو مسئلہ گردشی قرضہ کا ہے،سیکرٹری پٹرولیم نے کہا کہ پاک ایران منصوبہ پر عمل جاری ہے اوگرا چےئرمین نے کہا کہ بحران کے ذمہ دار ہم نہیں وزارت پٹرولیم ہے،کمیٹی کے ارکان نے مطالبہ کیا کہ ایک اعلیٰ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

29-01-2015 :تاریخ اشاعت