پاکستان کا بھارت اور امریکہ کے درمیان ہونیوالے سمجھوتوں پر شدید تشویش کا اظہار ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ جنوری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-01-28
تاریخ اشاعت: 2015-01-28
تاریخ اشاعت: 2015-01-28
تاریخ اشاعت: 2015-01-28
تاریخ اشاعت: 2015-01-28
تاریخ اشاعت: 2015-01-28
تاریخ اشاعت: 2015-01-28
تاریخ اشاعت: 2015-01-28
تاریخ اشاعت: 2015-01-28
پچھلی خبریں -

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:14 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:15 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:18 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:19 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:54 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:56 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

پاکستان کا بھارت اور امریکہ کے درمیان ہونیوالے سمجھوتوں پر شدید تشویش کا اظہار ،بھارت سے سمجھوتہ ایکسپریس پر حملہ کے ملزمان کو کیفرکردار پہنچانے اور امریکہ سے امتیازی پالیسی اختیار کرنے کی بجائے سٹرٹیجک استحکام اور جمہوری ایشیا میں توازن کیلئے تعمیری کردار ادا کرنے کا مطالبہ،سلامتی کونسل کی قراردادوں کو پامال کرنیو الے ملک کو اس کونسل کی مستقل رکنیت دینے کا کوئی جواز نہیں،سرتاج عزیز،پاکستان کا دہشت گردی کے خلاف عزم کسی شک و شبہ سے بالاتر ہے،دیگر ملکوں سے بھی اسی قسم کے عزم کی توقع رکھتے ہیں،اوبامہ کے دورہ بھارت کے بعد پہلا ردعمل

اسلام آباد( اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔28جنوری۔2015ء )پاکستان نے بھارت اور امریکہ کے درمیان ہونیوالے سمجھوتوں پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے بھارت سے سمجھوتہ ایکسپریس پر حملہ کے ملزمان کو کیفرکردار پہنچانے اور امریکہ سے امتیازی پالیسی اختیار کرنے کی بجائے سٹرٹیجک استحکام اور جمہوری ایشیا میں توازن کیلئے اپنا تعمیری کردار ادا کرنے کا مطالبہ کیا ہے اور مشیر امور خارجہ و قومی سلامتی سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ سلامتی کونسل کی قراردادوں کو پامال کرنیو الے ملک کو اس کونسل کی مستقل رکنیت دینے کا کوئی جواز نہیں،پاکستان کا دہشت گردی کے خلاف عزم کسی شک و شبہ سے بالاتر ہے،دیگر ملکوں سے بھی اسی قسم کے عزم کی توقع رکھتے ہیں۔

منگل کو امریکی صدر اوبامہ کے دورہ بھارت کے بعد جاری ہونے والے ایک بیان میں پہلا ردعمل دیتے ہوئے سرتاج عزیز نے کہا کہ ہم نے امریکہ اور بھارت کے درمیان ہونے والے سمجھوتوں اور ان کے بیانات کا محتاط جائزہ لیا ہے جو صدر اوبامہ کے دورہ بھارت کے دوران دیئے گئے ۔ ہم ان سمجھوتوں کے پاکستان کی سلامتی پر طویل مدت اثرات کا جائزہ لے رہے ہیں تاہم اس حوالے سے فوری طور پر کچھ ردعمل کا اظہار کیا جاسکتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کے عالمی خطرے سے موثر انداز میں نمٹنے کیلئے تمام رکن ممالک کا تعاون اور مشترکہ اقدامات ناگزیر ہیں ۔ پاکستان دہشتگردی کے خاتمے کیلئے عالمی برادری کا ایک سب سے آگے رہنا والا حلیف ہے اور ہم دیگر ملکوں سے بھی اسی قسم کے عزم کی توقع رکھتے ہیں ۔ پاکستان دہشتگردی کا سب سے بڑا شکار بھی ہے جس میں بیرون ملک سے تعاون اور مدد سے ہونے والی دہشتگردی بھی شامل ہیں ۔ دہشتگردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کا کردار اور قربانیاں عالمی سطح پر تسلیم کی گئی ہیں پاکستان دہشتگردی کیخلاف جنگ کے حوالے سے اپنے عزم پر کسی قسم کے شکوک وشبہات کو مستردکرتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کی مذمت کے دوران دوہرا معیار نہیں ہونا چاہیے اور نہ ہی مخصوص بنیادوں پر اس کی مذمت ہونی چاہیے ۔ پاکستان بھارت سے اس مطالبے کو دوہراتا ہے کہ وہ فروری 2007ء میں میں سمجھوتہ ایکسپریس پر دہشتگردانہ حملے میں ملوث منصوبہ سازوں اور سازش کے ذمہ داروں کو انصاف کے کٹہرے میں لائے ۔ سرتاج عزیز نے کہا

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

28-01-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان