آئین وقانون کو ویب سائٹ پر ڈالنے ، مقامی زبانوں میں ترجمہ کرنے اور عوام کو اس کی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ جنوری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-01-23
تاریخ اشاعت: 2015-01-23
تاریخ اشاعت: 2015-01-23
تاریخ اشاعت: 2015-01-23
تاریخ اشاعت: 2015-01-23
تاریخ اشاعت: 2015-01-23
تاریخ اشاعت: 2015-01-23
تاریخ اشاعت: 2015-01-23
تاریخ اشاعت: 2015-01-23
تاریخ اشاعت: 2015-01-23
تاریخ اشاعت: 2015-01-23
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:05 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:06 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:09 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:16 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:11:11 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:11:13 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

آئین وقانون کو ویب سائٹ پر ڈالنے ، مقامی زبانوں میں ترجمہ کرنے اور عوام کو اس کی مفت اور آسان فراہمی کیلئے دائر درخوا ستیں ،جسٹس جواد ایس خواجہ کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے معاملہ چیف جسٹس آف پاکستان کو بھجوادیا، معاملہ سنجیدہ ہے اس پر خصوصی بینچ قائم کیاجائے،عدالت کی ا ستدعا، ویب سائیٹ پر کاؤنٹر ٹیررازم کا کوئی قانون موجود نہیں اس طرح دہشتگردوں کیخلاف کیسے لڑائی لڑینگے ،جسٹس جواد ایس خواجہ کے ریمارکس،اگر صحافیوں کو کالعدم تنظیموں کے نام نہیں معلوم تو اس پر ان کو سزا بھی مل سکتی ہے ۔ جسٹس قاضی فائز عیسی

اسلام آباد( اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔23جنوری۔2015ء )سپریم کورٹ کے جسٹس جواد ایس خواجہ کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے آئین اور قانون کو ویب سائٹ پر ڈالنے ، مقامی زبانوں میں ترجمہ کرنے اور عوام کو اس کی مفت اور آسان فراہمی کیلئے دائر درخواستوں کا معاملہ چیف جسٹس آف پاکستان کو بھجواتے ہوئے ان سے استدعا کی ہے کہ یہ ایک سنجیدہ معاملہ ہے اس پر خصوصی بینچ قائم کیاجائے جبکہ جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ ویب سائیٹ پر کاؤنٹر ٹیررازم کا کوئی قانون موجود نہیں اس طرح دہشتگردوں کیخلاف کیسے لڑائی لڑینگے صحافیوں تک کو کالعدم تنظیموں بارے کوئی معلومات نہیں وہ کیسے رپورٹنگ کرینگے اگر عوام کو ان کے اپنے ملک کے قوانین سے آگاہی نہیں ہوگی تو وہ کیسے حقوق تک رسائی حاصل کرسکیں گے حکومت دہشتگردی کیخلاف اور اس کے خاتمے کیلئے موثر اقدامات

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

23-01-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان