وفاقی حکومت او ر اتحاد المدارس دینیہ میں 14نکاتی اعلامیہ پر اتفاق رائے ہوگیا، ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار جنوری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-01-18
تاریخ اشاعت: 2015-01-18
تاریخ اشاعت: 2015-01-18
تاریخ اشاعت: 2015-01-18
تاریخ اشاعت: 2015-01-18
تاریخ اشاعت: 2015-01-18
تاریخ اشاعت: 2015-01-18
تاریخ اشاعت: 2015-01-18
تاریخ اشاعت: 2015-01-18
تاریخ اشاعت: 2015-01-18
تاریخ اشاعت: 2015-01-18
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:05 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:06 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:09 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:05:16 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:11:11 وقت اشاعت: 19/01/2017 - 11:11:13 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

وفاقی حکومت او ر اتحاد المدارس دینیہ میں 14نکاتی اعلامیہ پر اتفاق رائے ہوگیا، خودکش حملے اور ریاست کیخلاف مسلح جدوجہد کو حرام قراردیدیاگیا، تمام سیاسی جماعتیں اور مذہبی اکابرین دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے لئے شانہ بشانہ جدو جہد کرینگے،مدارس کی رجسٹریشن کیلئے کمیٹی تشکیل دینے ، آڈٹ اور بیرونی امداد حکومت کے ذریعے لینے ،دینی کتب کی اشاعت سے قبل مسودہ کی حکومت سے منظوری لینے پر بھی اتفاق کرلیاگیا،چودھری نثار نے حکومت کی جانب سے مدارس کو ہرممکن کا تعاون کی یقین دہانی کرادی ، دینی مدارس ملک کے دفاع اور سلامتی کیلئے ہراول دستے کا کردار ادا کرینگے، حکومت کے حلیف ہیں حریف نہیں، مدارس کے ساتھ امتیازی سلوک بند کیا جائے ،قاری حنیف جالندھری،ناروا سلوک پر سیکرٹری جنرل وفاق المدارس آبدیدہ، اجلاس میں گستاخانہ خاکوں کی بھی مذمت

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔18جنوری۔2015ء) وفاقی حکومت او ر اتحاد المدارس دینیہ میں 14نکاتی اعلامیہ پر اتفاق رائے ہوگیا، خودکش حملے اور ریاست کیخلاف مسلح جدوجہد کو حرام قراردیدیاگیا، تمام سیاسی جماعتیں اور مذہبی اکابرین دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے لئے شانہ بشانہ جدو جہد کرینگے،مدارس کی رجسٹریشن کیلئے کمیٹی تشکیل دینے ، آڈٹ اور بیرونی امداد حکومت کے ذریعے لینے ،دینی کتب کی اشاعت سے قبل مسودہ کی حکومت سے منظوری لینے پر بھی اتفاق کرلیاگیا، چودھری نثار نے حکومت کی جانب سے ہرممکن کا تعاون کی یقین دہانی کرادی جبکہ قاری حنیف جالندھری نے کہاہے کہ دینی مدارس ملک کے دفاع اور سلامتی کے لیے ہراول دستے کا کردار ادا کریں گے، ہم حکومت کے حلیف ہیں حریف نہیں، مدارس کے ساتھ امتیازی سلوک بند کیا جائے ،ناروا سلوک پر سیکرٹری جنرل وفاق المدارس آبدیدہ ہوگئے ۔

ہفتہ کے روز دہشت گردی کے خاتمے کے سلسلے میں نیشنل ایکشن پلان پر اتفاقِ رائے کے لیے وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کی سربراہی میں اجلاس منعقد ہوا ۔ اجلاس میں وفاقی وزیر مذہبی امور سردار محمد یوسف ، وزیر مملکت برائے مذہبی امور پیر امین الحسنات شاہ،وزیرا عظم کے معاونین ِ خصوصی خواجہ ظہیر احمد اور بیرسٹر ظفر اللہ خان ،مختلف سیاسی جماعتوں کے نمائندگان ، سرکاری اداروں کے سربراہان اور دینی مدارس کی پانچوں نمائندہ تنظیموں کے ذمہ داران نے شرکت کی۔

وفاق المدار س العربیہ پاکستان کے جنرل سیکرٹری مولانا محمد حنیف جالندھری نے اتحاد تنظیمات مدارس کی نمائندگی کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ ،دیگر وزراء اور تمام سیاسی جماعتوں کے ذمہ داران کے سامنے مدارس کا موقف بہت وضاحت کے ساتھ مدلل انداز سے پیش کیا ۔مولانا محمد حنیف جالندھری نے واضح کیا کہ دینی مدارس ملک کے دفاع اور سلامتی کے لیے ہراول دستے کا کردار کریں گے ۔انہوں نے کہا مدار س اور علماء وطلبہ خود دہشت گردی کا شکار ہیں اس لیے دہشت گردی کے اسباب وعوام کے خاتمے کے لیے دینی مدارس بھرپور کردار ادا کریں گے ۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ مدارس کو ہراساں کرنے اور مدارس پر بلاجواز چھاپے مارنے کا سلسلہ فی الفوربند ہونا چاہیے ۔مولانا محمد حنیف جالندھری طالبات کے مدارس پر پولیس چھاپوں اور ناروا سلوک کا تذکرہ کرتے ہوئے آبدیدہ ہو گئے جس پر چودھری نثار علی خان نے انہیں یقین دہانی کروائی کہ مدارس کے خلاف ثبوت کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جائے گی ۔مولانا محمد حنیف جالندھری نے چودھری نثار اور دیگر حکومتی وزراء کی طرف سے دینی مدارس کی قیادت کو اعتماد میں لینے اور مشاور ت کا اہتمام کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا اور ہر کہا کہ باہمی روابط اور افہام وتفہیم کے ذریعے ملک میں بہتری لائی جا سکے گی ۔

دوسری جانب شرکاء اجلاس نے رسول پاککے گستاخانہ خاکے چھاپنے والے مغربی جرائد کی پرزور مذمت کی اور اس بات پر زور دیا کہ تمام انبیاء کرام اور تمام مذاہب کے شعائر کے احترام کو یقینی بنانے کے لئے عالمی سطح پر قانون سازی کی جائے۔ اجلاس کے شرکاء نے گستاخانہ طرز عمل پرپوپ فرانسس کے موقف کو سراہا اور قوم کے نام پیغام دیا کہ شرانگیزی کے خلاف احتجاج کو پُر امن رکھا جائے اور قومی املاک کو ہرگز نقصان نہ پہنچایا جائے ۔

بعدازاں 14نکاتی متفقہ اعلامیہ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

18-01-2015 :تاریخ اشاعت