اپو زیشن کے شدید احتجا ج کے با وجو د گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ فیس آرڈیننس 2014ء ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
ہفتہ جنوری

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-01-17
تاریخ اشاعت: 2015-01-17
تاریخ اشاعت: 2015-01-17
تاریخ اشاعت: 2015-01-17
تاریخ اشاعت: 2015-01-17
تاریخ اشاعت: 2015-01-17
تاریخ اشاعت: 2015-01-17
پچھلی خبریں -

اسلام آباد

تلاش کیجئے

اپو زیشن کے شدید احتجا ج کے با وجو د گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ فیس آرڈیننس 2014ء کو قومی اسمبلی سے منظور ،حکومتی اراکین کا ایوان میں جشن ، اپو زیشن کی نعرے بازی‘ ایوان مچھلی منڈی بن گیا،اپوزیشن اراکین کا اجلاس سے بائیکاٹ‘ گیس انفراسٹرکچر آرڈیننس کو کالاقانون قرار دے دیا

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔17جنوری۔2015ء)حکومت کی جانب سے پیش کئے جانے والے گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ فیس آرڈیننس 2014ء کو قومی اسمبلی سے منظور کرا لیا گیا ہے‘ اسمبلی اجلاس میں ہنگامہ‘ آرڈیننس کی منظو ری کے خلاف ایوان میں حکومت کے خلاف اپو زیشن کی نعرے بازی‘ ایوان مچھلی منڈی بن گیا‘ اپوزیشن اراکین کا اجلاس سے بائیکاٹ‘ گیس انفراسٹرکچر آرڈیننس کو کالاقانون قرار دے دیا گیا متحدہ اپوزیشن نے آرڈیننس کی کاپیاں پھاڑ دیں‘ سپیکر کے ڈائس کا گھیراؤ‘ شدید نعرے بازی کی گئی۔

جمعہ کے روز قومی اسمبلی کے اجلاس میں جب وفاقی وزیر پیٹرولیم شاہد خاقان عباسی کے ایوان میں ہونے کے باوجود پارلیمانی سیکرٹری برائے پیٹرولیم شہزادی عمر زادی ٹوانہ نے گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ فیس آرڈیننس 2014ء کو ایوان میں پیش کیا۔ قبل ازیں متحدہ اپوزیشن آرڈیننس کے ایوان میں پیش کئے جانے سے قبل ہی لابی کی گیلری میں کھڑے ہو گئے اور احتجاجاً واک آؤٹ کیا۔ واک آؤٹ کرنے والی جماعتوں میں پیپلزپارٹی‘ ایم کیو ایم ‘ جماعت اسلامی‘ اور قومی وطن پارٹی شامل تھی۔



اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

17-01-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان