قوم دہشت گردی کے خاتمے کا پختہ عزم کرچکی ہے،وزیراعلیٰ پنجاب کا امن وامان سے متعلق ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل جنوری

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-01-13
تاریخ اشاعت: 2015-01-13
تاریخ اشاعت: 2015-01-13
تاریخ اشاعت: 2015-01-13
تاریخ اشاعت: 2015-01-13
تاریخ اشاعت: 2015-01-13
تاریخ اشاعت: 2015-01-13
پچھلی خبریں -

لاہور

تلاش کیجئے

قوم دہشت گردی کے خاتمے کا پختہ عزم کرچکی ہے،وزیراعلیٰ پنجاب کا امن وامان سے متعلق کانفرنس سے خطاب، دہشتگردی کے عفریت کا خاتمہ کر کے دم لیں گے،آنے والے کل میں پاکستان کی نئی تاریخ رقم ہو گی:شہبازشریف،اچھے یا برُے طالبان کی تفریق ختم ہوچکی ،تمام دہشتگرد برُے ہیں اوراب ان کے منطقی انجام کا وقت آگیا ہے، تاریخ میں اتحاد کا ایسا مثالی مظاہرہ پہلے کبھی دیکھنے میں نہیں آیا، اس تاریخی موقع سے فائدہ اٹھا کر دہشتگردی کوکچلنا ہے،انشاء اللہ کامیابی پاکستان کا مقدر بنے گی، میں دہشتگردی کے خلاف جنگ میں آپ کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑارہوں گا:وزیراعلیٰ پنجاب

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔13جنوری۔2015ء)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ قوموں کی زندگی میں مشکل چیلنجز آتے ہیں اور وہی قومیں سرخرو ہوتی ہیں جو بہادری، عزم ،محنت اورجدوجہد کے ساتھ مشکل حالات کا مقابلہ کرتی ہیں ۔پاکستانی قوم کو بھی دہشتگردی اور انتہاء پسندی کا مشکل چیلنج درپیش ہے ۔آرمی پبلک سکول پشاور میں معصوم بچوں کی شہادت سے پوری قوم دہشتگردی کے خلاف یک جان دو قالب ہو چکی ہے اورقوم فیصلہ کرچکی ہے کہ دہشتگردی کا خاتمہ کیے بغیر چین سے نہیں بیٹھے گی۔

آج اور آنے والے کل میں پاکستان کی نئی تاریخ رقم ہو گی۔پاکستان کی تاریخ میں اتحاد،اتفاق اوریگانگت کا ایسا مثالی مظاہرہ پہلے کبھی دیکھنے میں نہیں آیا،ہمیں اس تاریخی موقع سے فائدہ اٹھا کر دہشتگردی کے عفریت کو شکست فاش دینا ہے اور پاک سرزمین کو دہشتگردوں کے ناپاک وجود سے پاک کرناہے۔تمام تر توانائیوں ،اجتماعی بصریت اور مشترکہ حکمت عملی سے سفاک درندوں کا خاتمہ کریں گے۔اچھے یا برُے طالبان کی تفریق ختم ہوچکی ہے ۔

تمام دہشتگرد برُے ہیں جنہوں نے ملک کو نقصان پہنچایا ہے ،قوم کودکھ اورصدمے دےئے ہیں، اب ان کے منطقی انجام کا وقت آگیا ہے۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے ان خیالات کا اظہارآج یہاں امن و امان اور سکیورٹی انتظامات سے متعلق کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ صوبائی وزراء کرنل (ر) شجاع خانزادہ، عطا مانیکا ، بلال یاسین، رانا مشہود احمد،ایم این ایز حمزہ شہباز شریف،افضل کھوکھر، ایم پی اے رانا ثناء اللہ، معاونین خصوصی،اراکین اسمبلی، چیف سیکرٹری،ایڈیشنل چیف سیکرٹری، ایڈووکیٹ جنرل، انسپکٹر جنرل پولیس، سیکرٹری داخلہ، متعلقہ سیکرٹریز، پنجاب کے 9 ڈویژنوں کے کمشنرز، آرپی اوز، 36 اضلاع کے ڈی سی اوز اور ڈی پی اوز کے علاوہ اعلیٰ حکام نے کانفرنس میں شرکت کی۔

وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے امن کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج یہ تاریخی لمحہ ہے کہ میں صوبے کے انتظامی و پولیس افسران سے مخاطب ہوں،کانفرنس کا واحد ایجنڈا پاکستان کو دہشتگردی کی لعنت سے چھٹکارا دلانا ہے ۔ دہشتگردی کا خاتمہ ہماری نمبر1ترجیح ہے جس کیلئے تمام درکار وسائل دیں گے۔دہشتگردی کے ناسورکے خاتمے کا یہ موقع” اب یا کبھی نہیں “ کا ہے ۔پشاور میں بہنے والے معصوم بچوں کے خون کے طفیل پوری قوم متحد ہوچکی ہے اوردہشتگردی کے عفریت کو شکست دینے کیلئے پرعزم ہے ۔

سیاسی و عسکری قیادت نے دہشتگردوں کے خاتمے کیلئے متفقہ طورپر نیشنل ایکشن پلان بنایا ہے جس پر عملدر آمد کے ذریعے دہشتگردوں کا خاتمہ کر کے تاریخ کا دھارا بدلیں گے۔16دسمبر کوپشاور کے آرمی پبلک سکول میں بچوں سے وحشی درندوں کی سفاکیت نے اگرچہ ہر دل کو زخمی کیااور آنکھ اشکبار ہوئی ،تاہم اس واقعہ کے بعد پاکستانی قوم دہشتگردی کے خاتمے کے عزم کے ساتھ ایک مضبوط اورتوانا قوم بن کر ابھری ہے ۔دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی بہادر افواج کے افسران ،جوانوں ،پولیس حکام،اہلکاروں اورعام شہریوں نے لازوال قربانیاں دی ہیں اور دنیا کی تاریخ میں پاکستانیوں کی دی گئی قربانیوں کی کوئی مثال نہیں ملتی اور تقریباً 50ہزار سے زائد پاکستانی دہشتگردی کے خلاف جنگ میں اپنی جانوں کے نذرانے پیش کرچکے ہیں۔

وزیراعلیٰ نے دہشتگردی کے خلاف جنگ میں قربانیاں دینے والوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ پاک افواج بہترین تربیت یافتہ ،منظم اورپیشہ وارانہ افواج میں سے ایک ہے۔انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پوری قومی قیادت اور حکومتی ادارے ایک پیج پر ہیں۔مقصد ہمارے سامنے ہے جسے ہم نے ہر صورت حاصل کرنا ہے ۔ہمیں پوری طرح متحد ہو کر ماضی کی غلطیوں سے سبق سیکھ کر آگے بڑھنا ہے اور پرامن پاکستان کی منزل حاصل کرنا ہے ۔

دہشتگردی اورانتہاء پسندی کا ناسور راتوں رات نازل نہیں ہوا اورنہ ہی یہ راتوں رات جائے گا بلکہ اس کیلئے تسلسل کے ساتھ موثر انداز میں اقدامات جاری رکھنا ہوں گے۔ انہوں نے کہاکہ سیاسی اورعسکری قیادت نے دہشتگردی کی لعنت سے ہمیشہ ہمیشہ کیلئے چھٹکارا پانے کیلئے پختہ ارادہ اورعزم کرلیا ہے۔اگر ہم نے اب بھی موقع سے فائدہ نہ اٹھایا اور مقصد کے حصول میں کوئی کوتاہی برتی توپھر کچھ نہیں بچے گااور آنے والی نسلیں بھی معاف نہیں کریں گی۔

انہوں نے کہا کہ امن کا براہ راست تعلق تعلیم،صحت ،انصاف اورسماجی و معاشی اقدامات سے جڑا ہوا ہے ۔امن ہوگا تو غیر ملکی سرمایہ کاری آئے گی،تجارتی ،سماجی ،معاشی ،صنعتی اوراقتصادی سرگرمیاں بڑھیں گی۔ہمیں اپنی آئندہ نسلوں کو پرامن اورمحفوظ مستقبل دینے کیلئے پاکستان کے نام پر کھڑے ہونا ہے ۔ملک سے ظلم،بربریت، ناانصافی، کرپشن،اقرباء پروری جیسی برائیوں کا مکمل خاتمہ کرنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ کس قدر ستم ظریفی ہے کہ اشرافیہ کو

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

13-01-2015 :تاریخ اشاعت