سول عدالتوں کی طرف سے آٹھ ہزار مجرموں کو سنائی گئی پھانسی کی سزاؤں پر حکومت نے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
پیر جنوری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-01-12
تاریخ اشاعت: 2015-01-12
تاریخ اشاعت: 2015-01-12
تاریخ اشاعت: 2015-01-12
تاریخ اشاعت: 2015-01-12
تاریخ اشاعت: 2015-01-12
تاریخ اشاعت: 2015-01-12
تاریخ اشاعت: 2015-01-12
تاریخ اشاعت: 2015-01-12
تاریخ اشاعت: 2015-01-12
تاریخ اشاعت: 2015-01-12
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

تلاش کیجئے

سول عدالتوں کی طرف سے آٹھ ہزار مجرموں کو سنائی گئی پھانسی کی سزاؤں پر حکومت نے خود عمل درآمد نہیں کیا‘سراج الحق،مدارس پر لگائے گئے الزامات کا حکومت آج تک کوئی ثبوت دے سکی نہ دہشت گردی میں ملوث کسی ایک بھی مدرسے کی نشاندہی کی گئی ،بار بار اختیارملنے کے باوجود دہشت گردی کے قلع قمع کیلئے حکومت کوئی متاثرکن کارکردگی نہیں دکھاسکی‘مرکزی شوری کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔12جنوری۔2015ء ) امیرجماعت ِ اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ سول عدالتوں کی طرف سے آٹھ ہزار مجرموں کو سنائی گئی پھانسی کی سزاؤں پر حکومت نے خود عمل درآمد نہیں کیا ،مدارس پر لگائے گئے الزامات کا حکومت آج تک کوئی ثبوت دے سکی نہ دہشت گردی میں ملوث کسی ایک بھی مدرسے کی نشاندہی کی گئی ،16دسمبر کے بعد پوری قوم متحد ہوکر حکومت کے ساتھ کھڑی ہوگئی تھی اور وزیر اعظم کو دہشت گردی کے خاتمہ کا مینڈیٹ دیا تھا مگر حکومت موقع سے فائدہ اٹھانے میں سو فیصد ناکام رہی ہے ،بار بار اختیارملنے کے باوجود دہشت گردی کے قلع قمع کیلئے حکومت کوئی متاثرکن کارکردگی نہیں دکھاسکی۔

تحفظ پاکستان بل کے نام سے شہریوں کی آزادیوں کو چھینا گیا مگر بدامنی اور دہشت گردی پر قابو پانے کی کوئی عملی شکل سامنے نہیں لائی گئی،حکومت دہشت گردی کو روکنے کیلئے کوئی پیشگی اقدامات نہیں کرسکی،یوں لگتا ہے کہ حکومت کو عوام کے جان ومال اور عزت کے تحفظ سے کوئی سروکار نہیں ،جماعت اسلامی کی شوریٰ نے طے کیا ہے کہ 2015میں بڑے پیمانہ پر رابطہ عوام مہم چلائی جائے گی اور جماعت اسلامی کے دروازے عام آدمی کیلئے کھول دیئے جائیں گے ،ملک بھر میں ممبر سازی مہم چلا کر ایک کروڑ لوگوں کو جماعت کے ممبر ،کارکن اوررکن بنایاجائے گا ،رابطہ عوام مہم میں ڈویژنل ہیڈکوارٹرز پر نوجوانوں ،کسانوں اور محنت کشوں کے بڑے بڑے کنونشن منعقد کئے جائیں گے ،یوتھ پالیسی کے تحت دس لاکھ نوجوانوں کو جماعت میں شامل کیا جائے گا،ملک بھر سے اقلیتوں پر مشتمل پاکستانی برادری کو بھی جماعت میں شامل کرکے ان کا علیحدہ ونگ قائم کیاجائے گا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے سہ روزہ مرکزی شوریٰ کے اجلاس کے بعد منصورہ میں سیکریٹری جنرل لیاقت بلوچ ،امیر جماعت اسلامی پنجاب ڈاکٹر سید وسیم اختر،امیر جماعت اسلامی بلوچستان اخوند زادہ عبدالمتین ،امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن ،امیر جماعت اسلامی سندھ ڈاکٹر معراج الہدٰی صدیقی اور سیکریٹری اطلاعات امیر العظیم کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی نے طے کیا ہے کہ اسٹیٹس کو کی مخالف جماعتوں کو متحد کرکے اس کے خلاف فیصلہ کن جنگ لڑی جائے گی

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

12-01-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان