سانحہ پشاور کے بعد ملکی مفاد کی خاطر لچک کا مظاہرہ کیا ہے،عمران خان ، اب حکومت ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ جنوری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-01-07
تاریخ اشاعت: 2015-01-07
تاریخ اشاعت: 2015-01-07
تاریخ اشاعت: 2015-01-07
تاریخ اشاعت: 2015-01-07
تاریخ اشاعت: 2015-01-07
تاریخ اشاعت: 2015-01-07
پچھلی خبریں -

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:14 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:15 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:18 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:19 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:54 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:56 اسلام آباد کی مزید خبریں

تلاش کیجئے

سانحہ پشاور کے بعد ملکی مفاد کی خاطر لچک کا مظاہرہ کیا ہے،عمران خان ، اب حکومت کو جوڈیشل کمیشن کے قیام پر اٹھارہ جنوری تک آخری مہلت دیتے ہیں، اس کے بعد ڈی چوک سمیت سڑکوں پر آکر شدید احتجاج کرینگے، شادی کرنا کوئی جرم نہیں ہے ، شادی کے حوالے سے رواں ہفتے پوری قوم کو خوشخبری سناؤں گا ،پریس کانفرنس سے خطاب

اسلام آباد( اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔7 جنوری۔2015ء ) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ سانحہ پشاور کے بعد ملکی مفاد کی خاطر تحریک انصاف نے بڑی لچک کا مظاہرہ کیا لیکن اب حکومت کو جوڈیشل کمیشن کے قیام کے حوالے سے اٹھارہ جنوری تک آخری مہلت دیتے ہیں، اس کے بعد ڈی چوک سمیت سڑکوں پر آکر شدید احتجاج کرینگے، شادی کرنا کوئی جرم نہیں ہے ، شادی کے حوالے سے رواں ہفتے پوری قوم کو خوشخبری سناؤں گا ۔

تفصیلات کے مطابق منگل کے روز تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے بنی گالہ میں اپنی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ این اے 122 پر دھاندلی ثابت کرنے کیلئے پورا ایک سال لگا اور اس کے پیچھے جواز سپیکر ایاز صادق کے اسٹے آرڈر تھے اور اب تک ایاز صادق اسٹے آرڈر کے پیچھے چھپے رہے انہوں نے کہا کہ این اے 122پر 30ہزار ووٹ جعلی نکلے اور وہاں پر کئی پولنگ سٹیشنوں پر مختلف رنگ کے بیلٹ پیپرز نکلے اور مسلم لیگ (ن) نے الیکشن کے آخری دنوں میں لاکھوں جعلی بیلٹ پیپرز چھپوائے اور جہانگیر ترین کے حلقے میں 49ہزار جعلی پولیس ووٹ نکلے انہوں نے کہا کہ سانحہ پشاور کی وجہ سے تحریک انصاف نے ملکی مفاد کی خاطر حکومت کا ساتھ دیا اور مکمل طور پر لچک دکھائی جبکہ پارٹی کے اندر شدید اختلافات کے باوجود بھی ملٹری کورٹس کے حوالے سے حکومت کا ساتھ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

07-01-2015 :تاریخ اشاعت

:متعلقہ عنوان