فوجی عدالتوں کا فیصلہ تسلیم نہیں کرتے تو ایک اور دہشت گردی کا سامنا کرناپڑتا،رحمان ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار جنوری

مزید قومی خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

تلاش کیجئے

فوجی عدالتوں کا فیصلہ تسلیم نہیں کرتے تو ایک اور دہشت گردی کا سامنا کرناپڑتا،رحمان ملک، دہشت گردوں نے اپنی حکمت عملی بدل دی ہے، اس لئے پیپلز پارٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ آئین میں ترمیم ہونی چاہیے، ایم کیو ایم اور پیپلزپارٹی کے تعلقات دیرینہ ہیں، الطاف حسین سے کل بھی رابطہ ہوا، آج پھر بات ہوگی، دونوں جماعت صوبے میں بہتر کارکردگی کیلئے پرعزم ہیں،میڈیاگفتگو

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔4 جنوری۔2015ء)پیپلز پارٹی کے رہنما اور سابق وزیر داخلہ اے رحمان ملک نے کہا ہے کہ دہشت گردوں نے اپنی حکمت عملی بدل دی ہے، اس لئے پیپلز پارٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ آئین میں ترمیم ہونی چاہیے۔اگر ہم فوجی عدالتوں کے قیام کا فیصلہ تسلیم نہیں کرتے تو ایک اور بڑی دہشت گردی کا سامنا کرناپڑتا۔ ایم کیو ایم اور پیپلزپارٹی کے تعلقات دیرینہ ہیں، الطاف حسین سے کل بھی رابطہ ہوا، آج پھر بات ہوگی، دونوں جماعت صوبے میں بہتر کارکردگی کیلئے پرعزم ہیں۔

میڈیا اطلاعات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کی وزارت کی کرسی گلے کو آگئی، قائم علی شاہ کی کرسی بچانے اور روٹھے اراکین کو منانے کیلئے پی پی قیادت اور رہ نما سرگرم ہوگئے ہیں، پی پی اراکین نے ناراض ساتھیوں اور دیگر جماعتوں کے ساتھ رابطوں اور تعلقات میں تیزی دکھانا شروع کردی ہے۔سندھ اسمبلی میں وزیراعلیٰ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

04-01-2015 :تاریخ اشاعت