این اے122،دوبارہ گنتی سے دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوگیا،عمران خان،ہمارا موقف ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
اتوار جنوری

مزید اہم خبریں

تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
تاریخ اشاعت: 2015-01-04
- مزید خبریں

اسلام آباد

تلاش کیجئے

این اے122،دوبارہ گنتی سے دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوگیا،عمران خان،ہمارا موقف سچ ثابت ہوا ،بڑے پیمانے پر دھاندلی ثابت ہوگئی،30 ہزار سے زائد ووٹ بوگس نکلے،فارم14 اور15 کا ریکارڈ موجود ہی نہیں تھا،بیگز پر این اے 122 کی جگہ این اے124لکھا تھا،کچھ بیگز سے صوبائی اسمبلی کے ووٹ کاسٹ کئے گئے ، سربراہ عمران خان،کمیشن کی حتمی رپورٹ آنے کے بعد سپیکر ایاز صادق کو استعفیٰ دینا پڑے گا، شیری مزاری

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔4 جنوری۔2015ء)پاکستا ن تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ این اے 122 کی جانچ پڑتال سے دودھ کا ددوھ اور پانی کا پانی ہوگیا ہے۔ہمارا موقف سچ ثابت ہوا ہے۔بڑے پیمانے پر دھاندلی ثابت ہوگئی ہے ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق عمران خان نے کہا ہے کہ جانچ پڑتال کے دوران30 ہزار سے زائد ووٹ بوگس نکلے ہیں اورکچھ بیگز پر این اے122 کی جگہ این اے124 لکھا ہوا ہے ۔انہوں نے کہا کہ فارم 14 اور15 کا ریکارڈ بھی موجود نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ کچھ بیگوں میں صوبائی اسمبلی کے ووٹ کاسٹ کئے گئے ہیں ۔عمران خان مطالبہ کیا کہ فوری طور پر جوڈیشل کمیشن تشکیل دے کر انتخابات کی جانچ پڑتال کی جائے ۔دریں اثناء پاکستان تحریک انصاف کی مرکزی سیکرٹری اطلاعات ڈاکٹر شیریں مزاری نے این اے 122میں انتخابی دھاندلی سے متعلق مسلم لیگ نواز کے رہنماؤں کے بیانات کو جھوٹ اور لغو قرار دیتے ہوئے اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا ہے۔

مرکزی میڈیا سیل سے جاری بیان میں ان کا کہنا ہے کہ مسلم لیگ نواز کے افواہ ساز حلقہ 122میں کیے جانے والے انتخابی فراڈ سے متعلق قوم سے مسلسل جھوٹ بولنے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

04-01-2015 :تاریخ اشاعت