لیبیا دہشت گردوں کی آماج گاہ بنتا جارہا ہے:فرانس ،عالمی برادری بدستور خاموش رہتی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ جنوری

تلاش کیجئے

لیبیا دہشت گردوں کی آماج گاہ بنتا جارہا ہے:فرانس ،عالمی برادری بدستور خاموش رہتی ہے تو یہ اس کی سنگین غلطی ہوگی،وزیردفاع ویس لی ڈرائین

نجامینا (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔2 جنوری۔2015ء)سفرانس کے وزیردفاعژاں وائی ویس لی ڈرائین نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ لیبیا کو دہشت گردوں کی آماج گاہ بننے سے بچانے کے لیے اقدامات کرے۔لی ڈرائین نے خبردار کیا ہے کہ لیبیا دہشت گردوں کی پناہ گاہ میں تبدیل ہوتا جارہا ہے اور یہ ملک یورپ کے بھی قریب ترین ہے۔انھوں نے لیبیا کے پڑوسی ملک چاڈ کے دارالحکومت نجامینا میں فرانسیسی فوجی اڈے پر فوجیوں سے خطاب میں کہا کہ ''اگر عالمی برادری بحر متوسطہ کے وسط میں واقع اس ملک میں دہشت گردی کی سرگرمیوں پر بدستور خاموش رہتی ہے تو یہ اس کی ایک سنگین غلطی ہوگی۔

اس لیے اب ہرکسی کو آگے بڑھنا ہوگا''۔فرانسیسی وزیردفاع نے کہا کہ ''پڑوسی ممالک اور عالمی برادری کی یہ ذمے داری ہے کہ وہ لیبیا کی مدد کے لیے اٹھ کھڑے ہوں اور اس ملک میں استحکام میں مدد دیں''۔انھوں نے یہ مطالبہ ایسے وقت میں کیا ہے جب لیبیا میں اقوام متحدہ کامشن متحارب دھڑوں کے درمیان امن مذاکرات کا نیا دور شروع کرانے کی منصوبہ بندی کررہا ہے۔ان مذاکرات کا مقصد گذشتہ کئی ماہ سے جاری تشدد اور سیاسی تعطل کا خاتمہ ہے۔

واضح رہے کہ لیبیا میں سابق مطلق العنان صدر معمر قذافی کی حکومت کے خاتمے کے ساڑھے تین سال بعد بھی امن قائم نہیں ہوسکا ہے اور اس وقت ملک میں دو متوازی حکومتیں اور پارلیمان قائم ہیں۔بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ پارلیمان اس وقت مصر کی سرحد کے نزدیک واقع شہر طبرق

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

02-01-2015 :تاریخ اشاعت