ملک میں تعلیم کے فروغ کے لئے سالانہ بجٹ کا کم از کم 15سے 20فیصد خرچ کرنا ہوگا
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ جنوری

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 11/01/2017 - 17:30:32 وقت اشاعت: 11/01/2017 - 17:26:45 وقت اشاعت: 11/01/2017 - 17:26:44 وقت اشاعت: 11/01/2017 - 17:26:43 وقت اشاعت: 11/01/2017 - 17:15:02 وقت اشاعت: 11/01/2017 - 17:18:43 وقت اشاعت: 11/01/2017 - 17:18:41 وقت اشاعت: 11/01/2017 - 17:11:17 وقت اشاعت: 11/01/2017 - 17:11:17 وقت اشاعت: 11/01/2017 - 17:11:16 وقت اشاعت: 11/01/2017 - 17:11:16
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

ملک میں تعلیم کے فروغ کے لئے سالانہ بجٹ کا کم از کم 15سے 20فیصد خرچ کرنا ہوگا

بلوچستان اور دوردراز کے پسماندہ علاقوں میں تعلیم کا فروغ اولین ترجیح ہے , وزیرمملکت تعلیم وپیشہ وارانہ تربیت انجینئر محمد بلیغ الرحمٰن کا قومی تعلیمی پالیسی کے اختتامی سیشن سے خطاب

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 جنوری2017ء) وزیرمملکت تعلیم وپیشہ وارانہ تربیت انجینئر محمد بلیغ الرحمٰن نے کہاہے کہ ملک میں تعلیم کے فروغ کے لئے سالانہ بجٹ کا کم از کم 15سے 20فیصد خرچ کرنا ہوگا، کردار سازی نئی تعلیمی پالیسی کااہم جزو ہوگا، بلوچستان اور دوردراز کے پسماندہ علاقوں میں تعلیم کا فروغ اولین ترجیح ہے۔ بدھ کو وہ قومی تعلیمی پالیسی کے دور روزہ اجلاس کے اختتامی سیشن سے خطاب کررہے تھے۔

اس موقع پر انہوںنے کہاکہ عالمی اداروں کے مطابق تعلیم پر کل بجٹ کا 15سی20فیصد یا جی ڈی پی کا 4فیصد خرچ کرنا ضروری ہے ۔ انہوںنے کہاکہ مختلف صوبے تعلیم پر بجٹ مختص کرنے میں ایک دوسرے سے سبقت لے جانے کی کوشش کررہے ہیںاور ایک صوبہ نے دعویٰ کیا کہ انہوںنے تعلیم کے لئے 28فیصد بجٹ مختص کیا لیکن وہ اس کو خرچ نہ کرسکے۔ وزیر مملکت نے کہاکہ 18ویں ترمیم کے بعد تعلیم صوبوں کو منتقل ہو چکی ہے اس لئے وفاق کل بجٹ کا 8فیصد بھی خرچ کرتاہے تو یہ بہت ہو گا۔

انہوںنے کہاکہ بلوچستان اور دوردراز کے پسماندہ علاقوں میں تعلیم کا معیار

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

11/01/2017 - 17:18:43 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان