لاہور ہائیکورٹ نے نجی یونیورسٹی سے ڈی فارمیسی کرنے والے طالبعلموں کو ڈگریاں جاری ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات نومبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 17/11/2016 - 20:15:57 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 20:15:51 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 20:15:49 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 19:00:13 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 20:13:35 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 20:13:32 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 20:13:30 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 20:13:27 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 20:13:22 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 20:13:21 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 20:13:20
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

لاہور ہائیکورٹ نے نجی یونیورسٹی سے ڈی فارمیسی کرنے والے طالبعلموں کو ڈگریاں جاری نہ کرنے کیخلاف درخواست پر وکلاء کو بحث کیلئے طلب کر لیا

لاہور۔17نومبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 نومبر2016ء)لاہور ہائیکورٹ نے نجی یونیورسٹی سے ڈی فارمیسی کرنے والے طالبعلموں کو ڈگریاں جاری نہ کرنے کے خلاف دائر درخواست پر فریقین کے وکلاء کو بحث کیلئے طلب کر لیا۔ جسٹس عابد عزیز شیخ نے کیس کی سماعت کی،درخواست گزار ہما ناز وغیرہ نے موقف اختیار کیا کہ نجی یونیورسٹی سے ڈی فارمیسی مکمل ہونے کے باوجود ڈگریاں جاری نہیں کی جا ر ہی ہیں جس سے طلبہ کامستقبل دائو پر لگ گیا ہے،ہائر ایجوکیشن کمیشن کے ڈائریکٹر جنرل نذیر حسین نے عدالت کو آگاہ کیا کہ نجی یونیورسٹی کا چارٹرڈ ڈی فارمیسی پروگرام کیلئے ہائر ایجوکیشن سے منظور شدہ نہیں،ہائر ایجوکیشن کمیشن کے وکیل ساجد اعجاز ہوتیانہ نے عدالت کو آگاہ کیا کہ نجی یونیورسٹی فارمیسی کونسل آف پاکستان سے منظور شدہ نہیںجس پر عدالت نے کہا کہ عدالت کو آگاہ کیا جائے کہ قانون کی خلاف ورزی کرنے والی یونیورسٹی کے خلاف حکومت یا ہائر ایجوکیشن کمیشن کیا کارروائی کر سکتا ہے،عدالت نے کیس کی مزید سماعت تئیس نومبر تک ملتوی کرتے ہوئے فریقین کے وکلاء کو مزید بحث کیلئے طلب کر لیا۔

17/11/2016 - 20:13:32 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان