مسلمانوں کے خلاف نفرت کے بیج بوئے جا رہے ہیں، رجب طیب اردوان
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات نومبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 17/11/2016 - 18:22:49 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 19:43:39 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 19:43:37 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 19:43:34 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 19:43:33 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 19:43:33 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 19:39:51 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 19:39:51 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 19:39:51 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 19:39:51 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 19:36:11
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

مسلمانوں کے خلاف نفرت کے بیج بوئے جا رہے ہیں، رجب طیب اردوان

داعش اور القاعدہ اسلام کو نقصان پہنچا رہی ہیں، ان کا دین اسلام سے کوئی تعلق نہیں , دہشتگردوں سے ملنے والے اسلحے کے تانے بانے مغربی ملکوں سے مل رہے ہیں , گولن تنظیم کو پاکستان کو نقصان پہنچانے سے پہلے ہی ختم کر دیں گے، , ترکی میں ناکام فوجی بغاوت پر پاکستان کی حمایت کے شکرگزار ہیں، مشکل وقت میں مدد کرنے پر پاکستانیوں کو فراموش کیا نہ کبھی کرینگے , مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کیا جائے، دہشتگردی کے ذریعے پاکستان اور افغانستان میں انتشار پیدا کیا جا رہا ہے،ترک صدر کا پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 نومبر2016ء) ترک صدر رجب طیب اردوان نے کہا ہے کہ مسلمانوں کے خلاف نفرت کے بیج بوئے جا رہے ہیں، داعش اور القاعدہ اسلام کو نقصان پہنچا رہی ہیں، ان تنظیموں کا دین اسلام سے کوئی تعلق نہیں ہے ، دہشتگردوں سے ملنے والے اسلحے کے تانے بانے مغربی ملکوں سے مل رہے ہیں،گولن تنظیم کو پاکستان کو نقصان پہنچانے سے پہلے ہی ختم کر دیں گے،۔

ترکی میں ناکام فوجی بغاوت پر پاکستان کی حمایت کے شکرگزار ہیں، مشکل وقت میں مدد کرنے پر پاکستانیوں کو فراموش کیا نہ کبھی کرینگے، مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کیا جائے، دہشتگردی کے ذریعے پاکستان اور افغانستان میں انتشار پیدا کیا جا رہا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کے روز پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے تاریخی خطاب کرتے ہوئے کیا۔

ترک صدر رجب طیب اردوان نے کہا کہ پاکستانی بھائیوں سے محبت اور خلوص کا اظہار کرتا ہوں۔ پارلیمنٹ سے تیسری مرتبہ خطاب کرنا میرے لئے باعث اعزاز ہے۔ ہم دونوں صرف الفاظ تک محدود نہیں بلکہ برادر اسلامی ملک ہیں۔ دوستی کی گہرائی کا اندازہ گزشتہ ایک سال میں ہونے والی پیشرفت سے لگایا جا سکتا ہے۔ 2014ء میں پشاور اے پی ایس حملے پر ترکی نے ایک روزہ سوگ منایا تھا۔

پاکستان اور ترکی بھائی چارے کے ماحول کو دنیا بھر میں عام کریں گے۔ پاکستان ہمیشہ ترکی کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑا رہا ہے۔ ترکی نے قومی اسمبلی کے متفقہ قرارداد کا خیر مقدم کیا۔ جمہوریت کے لئے پاکستان کا موقف ہمارے لئے حوصلہ مند ثابت ہوا ہے۔ ترکی سے تعاون پر ایک مرتبہ پھر پاکستان کا شکر گزار ہوں۔ انہوں نے کہا کہ گولن نے 120ملکوں میں اپنی سرگرمیاں جاری رکھی ہوئی ہیں۔

ترکی میں ناکام فوجی بغاوت پر پاکستان کی اولین کے مشکور ہیں۔ دہشتگرد تنظیموں کو پاکستان میں نقصان پہنچانے سے قبل ختم کر دیا جائے گا۔ دہشتگردی کے خلاف ترکی اور پاکستان کا تعاون جاری رہنا چاہیئے۔ دہشتگرد تنظیمیں صرف پاکستان کو نقصان پہنچا رہی ہیں۔ دہشت

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

17/11/2016 - 19:43:33 :وقت اشاعت