سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے ریلوے کا اجلاس
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات نومبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 17/11/2016 - 16:37:03 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 16:36:05 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 16:36:05 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 16:36:05 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 16:36:05 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 16:36:05 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 16:24:20 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 16:33:15 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 16:33:12 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 16:31:23 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 16:31:18
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے ریلوے کا اجلاس

ریلوے ٹریک مین لائن ون اور ریلوے کے سی پیک کے حوالہ سے مختلف منصوبہ جات کا تفصیلی جائزہ،ریلوے حادثات اور زمینوں پو قبضوں کے حوالے سے تفصیلات طلب , زمینوں کی کمرشلائزیشن کیلئے پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کی کمیٹیوں کی مشترکہ میٹنگ کرائی جائے، سفارشات پر عملدرآمد کرایا جائے گا تاکہ شفافیت برقرا رہے، وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 نومبر2016ء) سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے ریلوے کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سینیٹر سردار فتح محمد محمد حسنی کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہائوس میں منعقد ہوا جس میں گزشتہ اجلاسوں میں دی گئی سفارشات پر عملدرآمد کے علاوہ ریلوے ٹریک مین لائن ون اور ریلوے کے سی پیک کے حوالہ سے مختلف منصوبہ جات کاتفصیل سے جائزہ لیا گیا۔

اراکین کمیٹی نے ٹرینوں کے آئے روز ہونے والے ایک ہی طرز کے حادثات پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ریلوے حادثات معمول بن گئے ہیں، کھڑی ٹرینوں کی ٹکر ہو جاتی ہے۔ ایک جیسی وجوہات سامنے آ رہی ہیں، بے شمار جانی و مالی نقصان ہو رہا ہے، آئندہ اجلا س میں ان معاملات پر تفصیل سے آگاہ کیا جائے۔ اراکین نے کمیٹی کے اجلاس بار بار ملتوی ہونے پر بھی سخت برہمی کا اظہار کیا اور چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ آئندہ وفاقی وزارت ریلوے سے کنفرم ہونے پر اجلاس ملتوی نہیں کیا جائے گا۔

قائمہ کمیٹی کے اجلا س میں گزشتہ اجلاسوں میں دی گئی سفارشات پر عملدرآمد کے حوالہ سے معاملات کا تفصیل سے جائزہ لیا گیا۔ سیکرٹری ریلوے نے کہا کہ وزارت ریلوے کی زمین شالیمار ہسپتال اور ڈی ایچ اے کے زیر استعمال ہونے پر قائمہ کمیٹی نے ہدایت کی تھی کہ یہ اراضی واپس لی جائے۔ پنجاب حکومت کو خط لکھ دیا ہے اور یاد دہانی کا خط بھی ارسال کیا گیا مگر ابھی تک جواب نہیں آیا۔

چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ پنجاب حکومت کو خط لکھا جائے ا ور ایک ہفتے کے اندر شالیمار ہسپتال کی زمین کے متعلق فیصلہ کرے۔ وفاقی وزیر خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ ڈی سی او بہاولپورنے غیر قانونی زمین الاٹ کی اورپنجاب بورڈ آف ریونیونے غلطی تسلیم کی ہے اور وزیر اعلی پنجاب نے معاملے کو حل کرنے کے متعلق احکامات بھی جاری کر دیئے ہیں۔ چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ وزارت ریلوے کے چاروں صوبوں میں لنکس ہیں اور چاروں صوبوں کو خطوط لکھے جائیںکہ کہاں کہاں ریلوے کی زمین پر قبضہ کیا گیا ہے اور ریلوے ٹریک کی ساتھ کی زمین بچائی جائے اس کو کمرشلائز کر کے پورے ریلوے سسٹم کو بہتر کیا جا سکتا ہے۔



مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

17/11/2016 - 16:36:05 :وقت اشاعت