سرسید یونیورسٹی ایک کتابچہ شائع کرنے والی ہے جس میں سرسید احمد خان کے کارناموں ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات نومبر

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:08:33 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:08:33 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:08:33 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:08:32 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:05:34 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:05:34 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:05:34 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 14:54:28 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 14:02:58 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 14:02:58 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 14:00:47
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

سرسید یونیورسٹی ایک کتابچہ شائع کرنے والی ہے جس میں سرسید احمد خان کے کارناموں اور فکر کو اجاگر کیا جائے گا،چانسلر جاوید انوار

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 نومبر2016ء)سرسید یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے چانسلر جاوید انوار نے کہا ہے کہ اگلا سال سرسید احمد خان کی آگہی کا سال ہے اور ہم ان کا دو سو سالہ جشن شایانِ شان طریقے سے منائیں گے جس کے لئے پروگرامز ترتیب دئے جار ہے ہیں۔اس حوالے سے سرسید یونیورسٹی ایک کتابچہ شائع کرنے والی ہے جس میں ان کے کارناموں اور فکر کو اجاگر کیا جائے گا تاکہ ان کے افکار کے بارے میں جو ابہام ہیں وہ دور ہوں۔

شعبہ بائیومیڈیکل انجینئرنگ کے زیرِ اہتمام ایک بین الاقوامی سمینار کا انعقاد بھی ہوگا جس میں غیر ملکی ادارے بھی شرکت کریں گے۔اس موقع پر اردو اور انگریزی زبانوں میں ایک کیلنڈر بھی شائع کیا جائے گا۔سرسید نے فکر و آگہی کی جو آگ وہاں جلائی اس کی تپش اور حرارت یہاں بھی محسوس کی جاسکتی ہے۔دورِ حاضر کے عوامی رجحانات اور روییمعاشرے میں مثبت تبدیلیوں کی ضرورت کا احساس دلارہے ہیں۔

موجودہ حالات تبدیلی کے متقاضی ہیں جس کے لیے ہمیں غفلت کے اندھیروں سے نکلنا ہوگا اور سرسید احمد خان کی تعلیمات و فکر کا اپنانا ہوگا۔یہ بات انھوں نے علیگڑھ مسلم یونیورسٹی کے شعبہ عربی کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر ابوسفیان اصلاحیکے اعزاز میں سرسید یونیورسٹی کی جانب سے منعقدہ استقبالیہ سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔چانسلر جاوید انوار نے کہا کہ سرسید یونیورسٹی میں صرف تعلیم پر ہی توجہ نہیں دی جاتی بلکہ اس بات کو بھی ملحوظِ خاطر رکھا جاتا ہے کہ کردار و شخصیت سازی سے پورے اخلاص کے ساتھ طلباء کو ایک اچھا انسان بنایا جائے۔

ہم نہ صرف سرسید کی تعلیمات و تربیت کو آگے لے کر چل رہے ہیں بلکہ ان کی سوچ و فکرکی رہنمائی میں فروغِ تعلیم کے لیے تمام تر وسائل بروئے کار لارہے ہیں۔علیگڑھ مسلم یونیورسٹی سے تشریف لائے ہوئے مہمان پروفیسرڈاکٹر ابو سفیان اصلاحی نے کہا کہ سرسید کی فکر اور زندگی کے حوالے سے مقامی زبانوں میں

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

17/11/2016 - 15:05:34 :وقت اشاعت