بھارت کے شہربھوپال میں طلاق سے زیادہ خلع کے کیسز میں اضافہ
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات نومبر

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:21:40 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:02:38 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:02:37 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:01:47 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:01:47 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:01:47 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:01:47 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 15:01:47 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 14:14:52 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 14:14:44 وقت اشاعت: 17/11/2016 - 14:14:43
پچھلی خبریں - مزید خبریں

بھارت کے شہربھوپال میں طلاق سے زیادہ خلع کے کیسز میں اضافہ

12 میں شہر میں 6587 نکاح ہوئے اور 355 خلع کے معاملے پیش آئے، 2013 میں 5725 شادیاں ہوئیں اور 369 خلع ہوئے، 2014 میں ،5621 نکاح اور 355 خلع جبکہ 2015 میں ،5859 شادیاں ہوئیں اور 359 خلع کے معاملے پیش آئے، رواں برس 30 ستمبر تک 1627 نکاح ہو چکے ہیں جبکہ 212 خواتین خلع لے چکی ہیں،مقامی شرعی عدالت کے اعداد و شمار

بھوپال(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 نومبر2016ء)بھارت کے شہربھوپال میں طلاق سے زیادہ خلع کے کیسز میں اضافہ ہوگیا،مقامی شرعی عدالت کے اعداد و شمار کے مطابق 2012 کے بعد سے شہر میں طلاق کے مقابلے میں خلع کے کیس زیادہ رجسٹر ہوئے ہیں۔بھارتی میڈیا کے مطابق بھارت میںتین طلاقوں کو مسلم خواتین کے ساتھ زیادتی کے طور پر دیکھا جاتا ہے اور ملک میں گذشتہ کچھ دنوں سے اس مسئلے پر کافی بحث ہوتی رہی ہے۔

اس بارے میں ممکن ہے کہ مقامی عدالتوں کے اعداد و شمار مختلف ہوں لیکن بھوپال کی شرعی عدالت کے اعداد و شمار ایک اور ہی کہانی بیان کر رہے ہیں۔بھوپال کی شرعی عدالت کے اعداد و شمار کے مطابق 2012 کے بعد سے شہر میں طلاق کے مقابلے میں خلع کے کیس زیادہ رجسٹر ہوئے ہیں۔شرعی قانون کے مطابق شادی کو ختم کرنے کے سلسلے میں اگر مرد اپنی بیوی سے الگ ہونا چاہتا ہے تو وہ عورت کو طلاق دیتا ہے لیکن اگر عورت اپنے شوہر سے الگ ہونا چاہتی ہے تو اسے بھی علیحدگی کا حق حاصل ہے اور اس عمل کو 'خلع' کہا جاتا ہے۔

ہماری ملاقات ایک ایسی ہی مسلم خاتون منہاج سے ہوئی۔ 32 سالہ منہاج کا نکاح تقریبا چھ سال پہلے ہوا تھا۔ چند برس قبل منہاج کے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

17/11/2016 - 15:01:47 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان