پولیس تشدد سے جاں بحق نوجوان کے مقدمہ قتل کی اخراج رپورٹ پر 8افسران کیخلاف دائر ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ نومبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 16/11/2016 - 22:17:58 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 20:44:47 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 20:42:04 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 22:11:43 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 22:11:40 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 22:11:38 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 22:11:35 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 22:11:33 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 22:11:31 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 22:07:48 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 22:07:45
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

پولیس تشدد سے جاں بحق نوجوان کے مقدمہ قتل کی اخراج رپورٹ پر 8افسران کیخلاف دائر استغاثہ میں پانچ گواہان کے بیانات قلمبند

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 نومبر2016ء)اسلام آباد کی مقامی عدالت میں پولیس تشدد سے جاں بحق ہونے والے نوجوان کے مقدمہ قتل کی اخراج رپورٹ پرایس پی سی آئی اے،ڈائریکٹر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن مریم ممتاز،ایس ایچ او آئی نائن،ڈاکٹر نصیر سمیت 8افسران کے خلاف دائر استغاثہ میں پانچ گواہان کے بیانات قلمبند کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی ہے ۔

بدھ کو ایڈیشنل سیشن جج ویسٹ راجہ آصف محمود خان کی عدالت میں متوفی نوجوان محمد بشیر کے کزن حسن منصور نے استغاثہ دائر کیا ہے۔درخواست گزاروں کے وکلاء نے عدالت میں موقف اپنایا کہ نوجوان محمد بشیر پندرہ سے بیس سال سے ایکسائز دفتر میں بطور ایجنٹ کام کرتا ہے،پندرہ فروری دو ہزار سولہ کو نوجوان اپنے عزیزوں کے ساتھ ایچ نائن ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کے دفتر میں گاڑی کی رجسٹریشن کے لیے آیا تو آئی نائن پولیس نے چھاپہ مارا اور اس دوران ستر سے اسی افراد کو حراست میں لیا گیا جن میں محمد بشیر بھی شامل تھا،وکیل احتشام محمود تور نے موقف

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

16/11/2016 - 22:11:38 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان