قومی زراعت اور زراعت سے وابستہ صنعتوں پر ماحولیاتی تبدیلیوں کے منفی اثرات سے نمٹنے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ نومبر

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 16/11/2016 - 20:06:29 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 20:06:26 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 20:06:25 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 20:02:06 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 20:02:03 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 20:02:00 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 20:01:57 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 19:58:11 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 19:58:11 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 19:58:11 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 19:54:28
پچھلی خبریں - مزید خبریں

فیصل آباد

قومی زراعت اور زراعت سے وابستہ صنعتوں پر ماحولیاتی تبدیلیوں کے منفی اثرات سے نمٹنے کیلئے حکومت کو طویل المدتی پالیسیاں اور فوکسڈ حکمت عملی وضع کرنا ہوگی ،انجینئر سعید شیخ

فیصل آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 نومبر2016ء)قومی زراعت اور زراعت سے وابستہ صنعتوں پر ماحولیاتی تبدیلیوں کے منفی اثرات سے نمٹنے کیلئے حکومت کو طویل المدتی پالیسیاں اور فوکسڈ حکمت عملی وضع کرنا ہوگی ۔یہ بات فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدر انجینئر محمد سعید شیخ نے سسٹین ایبل ڈویلپمنٹ پالیسی انسٹیٹیوٹ کی ریسرچ اینالسٹ سماویہ بتول اور ریسرچ فیلو ڈاکٹر فہد سعید سے گفتگو کرتے ہوئے بتائی ۔

انہوں نے کہا کہ تاجروں اور بالخصوص برآمد کنندگان کو اپنے کاروبار سے متعلقہ مارکیٹ کی صورتحال اور آنے والے حالات سے بھی باخبر رہنا پڑتا ہے ۔تاہم جب تک انہیں اپنی صنعتوں کیلئے خام مال آسانی سے ملتا رہتا ہے وہ خاموش رہتے ہیں۔ زیادہ تر صنعتکار اس وقت آواز اٹھاتے ہیں جب انہیں خام مال کی حصول یا اس کی کمی کی وجہ سے قیمتوں میں اضافے کا عذاب برداشت کرنا پڑتا ہے ۔

انہوں نے بتایا کہ پاکستان میں نیاب۔ 78 کی کپاس کی ورائٹی کی وجہ سے پاکستان کی برآمدات 14 ملین گانٹھوں تک پہنچ گئی تھی مگر اس کے بعد مختلف بیماریوں موسمی تبدیلیوں اور دیگر وجوہات کی وجہ سے اس میں بتدریج کمی ہوتی گئی جس کی وجہ سے اب ہماری پیداوار 10 ملین بیل پر آگئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بہت سے مقامی برآمد کنندگان اپنے غیر ملکی خریداروں کی ضروریات کو پورا کرنے کیلئے لمبے ریشے والی کپاس دوسرے ملکوں سے درآمدبھی کرتے ہیں کیونکہ ہماری کپاس کا ریشہ چھوٹا ہوتا ہے ۔

انہوں نے مزید بتایا کہ عالمی مندے کی وجہ سے تمام ملکوں کی برآمدات کم ہوئی ہیں ۔ جبکہ پاکستان میں گزشتہ2 دہائیوںسے جاری امن و امان کی خراب صورت حال ،توانائی کے بحران اور پالیسیوں میں عدم استحکام کی وجہ سے صرف فیصل آباد کے 20 سے زائدبڑے Export Orientedادارے بند ہو چکے ہیں جنکی وجہ سے جہاں بڑے پیمانے پر مزدور بے روزگار ہوئے وہاں صرف اس کی وجہ سے زر مبادلہ میں 1.5 ارب ڈالر کی کمی بھی ریکارڈ کی گئی ۔

انہوں نے کہا کہ

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

16/11/2016 - 20:02:00 :وقت اشاعت