تھر کول منصوبہ جون 2016 سے کمرشل آپریشنز شروع کردیگا
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ نومبر

مزید تجارتی خبریں

وقت اشاعت: 16/11/2016 - 16:39:49 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 16:39:45 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 16:39:43 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 16:37:44 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 16:37:44 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 16:26:25 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 16:26:23 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 16:19:08 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 16:12:08 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 16:12:00 وقت اشاعت: 16/11/2016 - 16:00:55
پچھلی خبریں - مزید خبریں

کراچی

تھر کول منصوبہ جون 2016 سے کمرشل آپریشنز شروع کردیگا

یہ کوئلے سے چلنے والے تھر کے پہلے منصوبے ،پاک چین اقتصادی راہداری میں شامل اہم منصوبہ ہے،شمس الدین شیخ

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 نومبر2016ء) کوئلہ سے چلنے والی660میگاواٹ کی پیداواری صلاحیت کے حامل تھر پاور پلانٹس پہلے فیز میں3جون 2019 سے تجارتی آپریشنز کا آغاز کردینگے۔اس سے پہلے توانائی کے پراجیکٹس کے کمرشل آپریشنز کی تاریخ اکتوبر 2019تھی لیکن منصوبہ کے مدت سے پہلے ہی تعمیرمکمل ہوجانے کے امکان کی بدولت پہلے کی تاریخ متعین کردی گئی ہے۔

یہ بات سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی کے سی ای او شمس الدین شیخ نے گزشتہ روزپریس کانفرنس کے دورا ن کہی۔ انہوں نے مزید کہا کہ منصوبہ کی فنانشل کلوزنگ۴ اپریل ۶۱۰۲ کو کرلی گئی تھی۔ جب سے اب تک منصوبے کا۲․۰۱فیصدکام مکمل کیا جاچکا ہے۔ شمس الدین نے کہا کہ کان کنی اور پاور پلانٹس پر کام بیک وقت تیزی سے جاری ہے۔ ’’یہ کوئلے سے چلنے والے تھر کے پہلے منصوبے ہیں اور پاک چین اقتصادی راہداری میں شامل اہم منصوبہ ہے، مزید براں یہ واحد منصوبہ ہے جس میں پرائیویٹ سیکٹر کی طرف سے بھی بھاری سرمایہ کاری کی گئی ہے۔

منصوبے کے دوسرے فیز میں ۰۳۳ میگاواٹ کی پیداواری صلاحیت کے حامل مزید دو نئے پاور پلانٹس جنوری ۷۱۰۲میں لگائے جائیں گے جو دسمبر ۹۱۰۲ تک مکمل کرلئے جائیں گے کیونکہ سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی حبکو اور تھل لمیٹڈکو بلاک ۲ میں پلانٹس کے لئی۶․۷ ایم ٹی پی اے کوئلہ ہٹانے کا معاہدہ کرچکی ہے۔‘‘ انہوں نے یہ بھی کہا کہ دسمبر ۱۲۰۲تک سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی ۴․۱۱ایم ٹی پی اے کوئلہ کی اضافی صلاحیت شامل کرنے کی منصوبہ بندی کرچکی ہے۔

’’دسمبر ۱۲۰۲تک تھر بلاک ۲ میں مزید پانچ توانائی کے منصوبے تعمیر کئے جائیںگے جس سے بجلی کی کُل پیداوار۰۰۰۳ میگاواٹ تک ہوجائے

مکمل خبر پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

16/11/2016 - 16:26:25 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان