بھارت ہٹ دھرمی کی پالیسی پر عمل پیرا ہے،طاقت اور تشدد کے بل بوتے پر تحریک آزادی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
بدھ نومبر

بھارت ہٹ دھرمی کی پالیسی پر عمل پیرا ہے،طاقت اور تشدد کے بل بوتے پر تحریک آزادی جموں و کشمیر کو دبانے کی ناکام کوشش کر رہا ہے،مزاحمتی احتجاجی تحریک جاری رہے گی،کشمیری حریت پسند رہنما میر واعظ عمرفاروق کی پی ٹی وی سے گفتگو

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 نومبر2016ء) کشمیری حریت پسند رہنما میر واعظ عمرفاروق نے کہا ہے کہ تحریک آزادی جموں وکشمیر میں نوجوانوں سمیت یہاں کے عوام کا پختہ عزم ہی ہمارا سب سے بڑا اثاثہ ہے اوریہ تحریک اب ایک اہم مرحلے میں داخل ہو چکی ہے، منگل کو پاکستان ٹیلی ویژن کے ایک پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم اپنی اس تحریک آزادی کو جلد سے جلد منطقی انجام تک پہنچانا چاہتے ہیںجس کے لیے بھرپور کوششیں بھی کی جا رہی ہین، بھارت ہٹ دھرمی کی پالیسی پر عمل پیرا ہے اور طاقت اور تشدد کے بل بوتے پر تحریک آزادی جموں و کشمیر کو دبانے کی ناکام کوشش کر رہا ہے، بھارت کی اس تحریک کو دبانے کی کوشش نہ تو ماضی میں کامیاب ہوئی ہے اور نہ ہی اب ہوگی، انہوں نے کہا کہ ہماری پوری مزاحمتی قیادت نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ متفقہ لائحہ عمل تشکیل دیا جائے اور مزاحمتی احتجاجی تحریک جاری رہے گی جس میں ہر طبقہ فکر کے لوگ شامل ہیں، یہاں کے لوگوں کی مشکلات میں کمی کے لیے بھی اقدامات کیے جا رہے ہیں تا کہ ہماری اس تحریک کے ساتھ ساتھ لوگوں کی مشکلات بھی کم ہوں، میر واعظ کا کہنا تھا کہ کشمیریوں کی یہ تحریک کسی کی سپانسرڈ نہیں بلکہ ہماری اپنی تحریک ہے جس میں ہم اپنے بنیادی حق حق خود ارادیت کے لیے آواز اٹھا رہے ہیں، ایک سوال کے جواب میں انہون نے کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ برہان وانی کی شہادت کے بعد اس تحریک میں ایک نئی لہر پیدا ہو چکی ہے اور کشمیری لوگوں کا کلیر مدعا یہی ہے کہ ہمیں ہمارا بنیادی حق حق خودارادیت ہر صورت چاہیے جس کے لیے کوششیں جاری رکھیں گے اور عوام کی مشکلات کو بھی کم کرنے کی کوشش کریں گے، ایک اور سوال کے جواب مین انہوں نے کہا کہ بھارتی مکروہ چہرہ عالمی دنیا کے سامنے بے نقاب ہوتا جا رہا ہے اور یہ بات سب کے سامنے واضح ہو رہی ہے کہ بھارت مقبوضہ وادی میں ظلم و بربریت کی انتہا کیے ہوئے ہے، میر واعظ عمر فاروق کا کہنا تھا کہ دنیا جانتی ہے کہ کشمیر ایک متنازعہ علاقہ ہے جسے پاکستان بھارت اور مقبوضہ کشمیر کے لوگوں کو مل کر حل کرنا ہوگا۔

16/11/2016 - 11:00:36 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان