امریکہ افغانستان میں جنگی جرائم کا مرتکب ہوسکتا ہے ،ْ جنگی جرائم کی عالمی عدالت ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل نومبر

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 15/11/2016 - 14:16:51 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 14:16:51 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 14:16:51 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 14:16:51 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 14:03:44 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 14:03:42 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:51:54 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:51:54 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:57:42 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:57:18 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:57:18
پچھلی خبریں - مزید خبریں

امریکہ افغانستان میں جنگی جرائم کا مرتکب ہوسکتا ہے ،ْ جنگی جرائم کی عالمی عدالت کے پراسیکیوٹر کا بیان

واشنگٹن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 نومبر2016ء) جنگی جرائم کی عالمی عدالت کے پراسیکیوٹر نے کہا ہے امریکہ افغانستان میں جنگی جرائم کا مرتکب ہوسکتا ہے۔افغانستان میں ممکنہ جنگی جرائم سے متعلق ابتدائی تحقیقات سے گفتگو کرتے ہوئے انٹرنیشنل کرمنل کورٹ کے چیف پراسیکیورٹر نے کہاکہ 04 ،ْ2003 کے دوران زیرحراست افراد سے تفتیش میں امریکی فوج اور سی آئی اے نے ایسے طریقے اپنائے جو جنگی جرائم کے زمرے میں آسکتے ہیں۔چیف پراسیکیوٹر نے کہا کہ کہ تفتیش میں زیرحراست افراد سے ظالمانہ سلوک، ٹارچر اور جنسی زیادتی جیسے واقعات کی معقو ل بیناد پر یہ سمجھاجا سکتا ہے کہ امریکی فوج اور سی آئی اے افغانستان میں جنگی جرائم میں ملوث ہے۔
15/11/2016 - 14:03:42 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان