اکرم شیخ نے قطرکے شہزادے کا خط سپریم کورٹ میں پیش کردیا-خط کی تحریرقابل اعتبار ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل نومبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:54:53 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:54:53 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:57:18 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:54:53 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:54:53 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:37:33 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:44:38 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:44:36 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:44:30 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:26:34 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:26:28
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

اسلام آباد شہر میں شائع کردہ مزید خبریں

وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:14 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:15 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:18 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:58:19 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:54 وقت اشاعت: 18/01/2017 - 10:59:56 اسلام آباد کی مزید خبریں

اکرم شیخ نے قطرکے شہزادے کا خط سپریم کورٹ میں پیش کردیا-خط کی تحریرقابل اعتبار نہیں -منی ٹریل کہاں ہے؟سپریم کورٹ کے بنچ کے جج صاحبان کے سوالوں پر نوازشریف کے بچوں کے وکیل لاجواب

ا سلام آباد(اردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔15 نومبر۔2016ء)سپریم کورٹ میں پانامالیکس کیس کی سماعت کے دوران وزیراعظم نوازشریف کے بچوں کے وکیل اکرم شیخ نے عدالت سے استدعا کی کہ وہ ایک ایسا خط پیش کرنا چاہتے ہیں جو محض عدالت کے لیے ہے۔ اگر عدالت مناسب سمجھے تو اسے عام نہ کیا جائے لیکن جب قطر کے سابق وزیر اعظم اور شہزادے حمد جاسم بن جابر الثانی کی جانب سے لکھا گیا یہ خط عدالت کے سامنے رکھا گیا تو فوراً ججوں نے اس پر سوال اٹھانا شروع کر دیے۔

حمد جاسم نے اپنے خط میں کہا تھا کہ ان کے والد کے مرحوم میاں محمد شریف کے ساتھ دیرینہ کاروباری مراسم تھے جو ان کے بڑے بھائی کے ذریعے چلایا جا رہا تھا۔خط میں ان کا کہنا تھا کہ دونوں خاندانوں کے درمیان آج بھی ذاتی تعلقات ہیں۔ حمد جاسم نے لکھا ہے کہ انہیں بتایا گیا کہ 1980 میں میاں محمد شریف نے الثانی خاندان کے قطر میں جائیداد کے کاروبار میں سرمایہ کاری کی خواہش ظاہر کی۔

میری دانست کے مطابق اس وقت دبئی میں کاروبار کے فروخت سے ایک کروڑ بیس لاکھ درہم دیے۔چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے جواب میں کہا کہ جب یہ خط ریکارڈ پر آئے گا تو خود بخود عام ہو جائے گا۔ انھوں نے دریافت کیا کہ آیا قطر کی یہ شخصیت بطور گواہ عدالت میں پیش ہوسکیں گے؟ تو

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

اس خبر نوں پنجابی وچ پڑھو
15/11/2016 - 13:37:33 :وقت اشاعت