جو دستاویزات جمع کروائی گئیں وہ وزیراعظم کے پارلیمنٹ میں دیے گئے بیان کے برعکس ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
منگل نومبر

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:26:34 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:26:28 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:26:26 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:26:26 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:26:26 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:19:25 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:10:13 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:07:53 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 13:06:34 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 12:56:12 وقت اشاعت: 15/11/2016 - 12:56:12
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسلام آباد

جو دستاویزات جمع کروائی گئیں وہ وزیراعظم کے پارلیمنٹ میں دیے گئے بیان کے برعکس ہیں- صرف لندن میں خریدے گئے فلیٹس پر فوکس کرینگے۔سپریم کورٹ

ا سلام آباد(اردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔15 نومبر۔2016ء)چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس انور ظہیر جمالی نے کہا ہے کہ پاناما کیس پر اتنی درخواستیں آرہی ہیں شاید الگ سے سیل کھولنا پڑے،ہم بار بار کہہ رہے ہیں سپریم کورٹ تفتیشی ادارہ نہیں ہے ،ہم صرف لندن میں خریدے گئے فلیٹس پر فوکس کرینگے۔ عمران خان، سراج الحق، شیخ رشید اور طارق اسد ایڈووکیٹ کی درخواستوں پر سماعت کے دوران ریمارکس دیتے ہوئے چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے کہا کہ 700صفحات ایک طرف سے 1600دوسری طرف سے جمع کرائے گئے ، ہم کوئی کمپیوٹر تو نہیں ایک منٹ میں صفحات کو اسکین کرلیں۔

بنچ کے رکن جسٹس عظمت سعید شیخ نے کہا کہ تحریک انصاف نے 6سو سے زائد صفحات کی دستاویزات جمع کرائیں جن کا کیس سے کوئی تعلق ہی نہیں ، درخواست گزار نے سچ کو خود ہی دفن کردیا ہے۔جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ چیئرمین نیب خود ساختہ جلاوطنی میں چین چلے گئے ہیں، ہم کیا کریں؟ نعیم بخاری نے جو کاغذات جمع کرائے ان کی ضرورت نہیں تھی، اخبارات کے تراشے کوئی ثبوت نہیں ہوتا۔

اکرم شیخ نے کہا کہ وزیراعظم کے بچوں کی دستاویزات جمع کرارہاہوں، جسٹس عظمت سعید نے ریمارکس دیے کہ کل جمع کرادیتے ہم دیکھ تو لیتے، حامد خان نے کہا کہ انہوں نے دستاویزات پہلے جمع کرانی تھی نا۔اس پر جسٹس عظمت سعید شیخ نے کہا کہ حامد خان صاحب آپ نے اخباری تراشے جمع کرادیے ہیں، اخباری تراشے الف لیلیٰ کی کہانیاں ہیں،الف لیلیٰ کی کہانیوں پر ہمارا وقت کیوں ضائع کیا؟ کیا کسی اخبار کی خبر پر کسی کو پھانسی ہو سکتی ہے؟ اخبار میں خبر آجائے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

15/11/2016 - 13:19:25 :وقت اشاعت