اسرائیلی حکومت نے سلواد میں فلسطینی شہریوں کی 231 ایکڑ اراضی یہودی توسیع پسندی ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ اگست

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 12/08/2016 - 19:06:55 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 19:05:29 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 19:05:29 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 17:03:27 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 17:03:27 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 17:02:22 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 17:02:22 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 17:02:22 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 16:47:53 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 16:39:49 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 16:39:47
پچھلی خبریں - مزید خبریں

اسرائیلی حکومت نے سلواد میں فلسطینی شہریوں کی 231 ایکڑ اراضی یہودی توسیع پسندی کیلئے استعمال کرنے کی منظوری دیدی

رام اللہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 اگست ۔2016ء) اسرائیلی حکومت نے فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے وسطی شہر رام اللہ میں سلواد کے مقام پر فلسطینی شہریوں کی 231 ایکڑ اراضی ہتھیانے اور اسے یہودی توسیع پسندی کے مقاصد کیلئے استعمال کرنے کی منظوری دے دی ہے۔اطلاعات کے مطابق جس اراضی کو یہودی توسیع پسندی کے مقاصد کیلئے استعمال میں لانے کی منظوری دی گئی ہے اس کے بارے میں اسرائیل نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ ’املاک متروکہ‘ میں شامل ہے اور املاک متروکہ صہیونی ریاست کے قانون کے تحت اسرائیل کی سرکاری ملکیت ہے۔



اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

12/08/2016 - 17:02:22 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان