مودی کابینہ کے اکتیس فیصد وزراء جرا ئم پیشہ نکلے
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ اگست

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:43:40 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:41:15 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:38:41 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:30:01 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:30:01 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:15:21 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:15:21 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:13:52 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:13:52 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:13:52 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:11:50
پچھلی خبریں - مزید خبریں

مودی کابینہ کے اکتیس فیصد وزراء جرا ئم پیشہ نکلے

نئی دہلی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 اگست۔2016ء)بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی اٹھہتر رکنی کابینہ کے چوبیس وزراء یعنی اکتیس فیصدکے خلاف مجرمانہ نوعیت کے مقدمات درج ہیں۔ ان میں سے اٹھارہ فیصد کے خلاف قتل، اقدام قتل اور اغوا جیسے جرائم کے مقدمات قائم ہیں،یہ بات بھارت میں سیاسی اور انتخابی اصلاحات کے لیے سرگرم ایک غیر سرکاری تنظیم ایسوسی ایشن فار ڈیموکریٹک ریفارمز (اے ڈی آر) نے اپنی ایک حالیہ رپورٹ میں بتائی ہے۔

یہ رپورٹ وزیر اعظم نریندر مودی کی کابینہ کے وزیروں کے انتخابات میں حصہ لینے سے قبل خود انہی کی طرف سے داخل کرائے جانے والے حلفی بیانات کی بنیاد پر مرتب کی گئی ہے۔بھار ت میں کسی بھی پارلیمانی ادارے کے لیے الیکشن میں حصہ لینے والے ہر امیدوار کو الیکشن حکام کو ایک ایسا حلف نامہ بھی جمع کرانا پڑتا ہے، جس میں اس امیدوار کے اپنے اثاثوں اور واجب الادا قرضوں کی تفصیلات کے ساتھ ساتھ اس کے خلاف درج مقدمات (اگر کوئی ہوں تو) کی تفصیلات بھی بتانا پڑتی ہیں۔

اے ڈی آر نامی الیکشن واچ ڈاگ نے اپنی اس رپورٹ میں کہا ہے کہ مجرمانہ نوعیت کے مقدمات صرف مرکزی وزراء کے خلاف ہی درج نہیں بلکہ ملک بھر کی ریاستی (صوبائی) اسمبلیوں کے 609 وزراء میں سے 201 کے خلاف بھی مختلف نوعیت کے مجرمانہ مقدمات درج ہیں۔ اسی طرح مختلف یونین ریاستوں میں سات وزیروں کو اپنے خلاف قتل اور چھ کو فرقہ ورانہ تشدد میں ملو ث ہونے کے الزامات کا سامنا بھی ہے۔

جن ریاستی وزیروں کے خلاف قتل کے مقدمات درج ہیں، ان میں بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار، اتر پردیش کے رام کرن آریہ اور گجرات کے چوہدری شنکر بھائی بھی شامل ہیں۔ ان کے علاوہ چھتیس گڑھ کے مہیش کمار گڈگا، راجستھان کے گلاب چند کٹاریا، راجندر راٹھور اور بہار میں رام وچار رائے ان وزراء میں شامل ہیں، جن کے خلاف اقدام قتل کے مقدمات درج ہیں۔

بھارت میں طویل عرصے سے یہ بحث چلی آ رہی ہے کہ ایسے کون کون سے اقدامات ہو سکتے ہیں، جن کی مدد سے سیاست میں صرف وہی افراد آ سکیں، جن کے خلاف مجرمانہ نوعیت کا کوئی بھی مقدمہ درج

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

12/08/2016 - 12:15:21 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان