ایران میں پھانسیوں کا سلسلہ جاری، علماء اہل سنت سراپا احتجاج
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ اگست

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:38:41 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:30:01 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:30:01 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:15:21 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:15:21 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:13:52 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:13:52 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:13:52 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:11:50 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:11:50 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:04:28
پچھلی خبریں - مزید خبریں

ایران میں پھانسیوں کا سلسلہ جاری، علماء اہل سنت سراپا احتجاج

تہران(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 اگست۔2016ء)ایران میں ملک دشمنی کی نام نہاد سازشوں کے الزامات میں قیدیوں کو اندھا دھند پھانسیاں دینے کا سلسلہ جاری ہے۔انسانی حقوق کی تنظیموں اور اہل سنت مسلک کے علماء نے ایران میں شہریوں کو دی جانے والی پھانسی کی سزاوٴں کی شدید مذمت کرتے ہوئے قیدیوں کا قتل عام بند کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ایران میں اہل سنت کے تین سرکردہ علماء نے اپنے اپنے بیانات میں کردوں، بلوچ اور دیگر سنی مسلمانوں کو پھانسیاں دیے جانے کی شدید مذمت کی ہے۔

یہ پہلا موقع ہے کہ ایرانی حکام کی طرف سے مجمع عام کا اعلان کرنے کے باوجود پھانسی کے وقت کوئی عام شہری موقع پر حاضر نہیں ہوا۔ کرد قیدی حسین عبداللھی کو جب پھانسی دی گئی تو اس موقع پر صرف ایرانی حکام ہی موجود تھے۔کردستان انسانی حقوق نیٹ ورک کی ویب سائیٹ پر پوسٹ ایک بیان میں بتایا

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

12/08/2016 - 12:13:52 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان