داخلہ پالیسیوں پر جرمنی میں اعتراضات،سیاسی جماعتوں میں پھوٹ پڑ گئی
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعہ اگست

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:11:50 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:11:50 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:04:28 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:04:28 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 12:02:39 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 11:42:38 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 11:42:38 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 11:42:38 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 11:12:59 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 11:12:59 وقت اشاعت: 12/08/2016 - 11:11:48
پچھلی خبریں - مزید خبریں

داخلہ پالیسیوں پر جرمنی میں اعتراضات،سیاسی جماعتوں میں پھوٹ پڑ گئی

برلن۔ 12 اگست (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 اگست۔2016ء) جرمن وزیر داخلہ تھامس ڈی مزائر نے سلامتی پیکیج سے متعلق جو تجاویز پیش کی تھیں ان پر مختلف حلقوں نے اعتراض شروع کر دیا ہے۔ ایف ڈی پی اور سی ڈی یو سیاسی جماعتیں ، مہاجرین سے متعلق پالیسیوں کے حوالے سے اپنی غلطیوں کی پردہ پوشی میں مصروف ہیں۔سوشل ڈیموکریٹ پارٹی کی سیکریٹری جنرل کاتارینہ بارلے نے کہا ہے کہ دوہری شہریت کا معاملہ وہ ہے جس پر بحث کی جا سکتی ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ ملکی سلامتی کے موضوع پر تمام سیاسی جماعتیں اپنا موقف وضع کریں تو بہتر ہوگا۔واضح رہے کہ جرمن وزیر داخلہ نے برقعے پر پابندی پر کہا تھا کہ ان کی سیاسی جماعت میں بعض افراد بھی اس پابندی کے خلاف ہیں۔
12/08/2016 - 11:42:38 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان