کوئٹہ کی قانونی برادری کو لاحق خطرات کا ازالہ کیا جائے، تحفظ کو یقینی بنایا جائے ..
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات اگست

مزید قومی خبریں

وقت اشاعت: 11/08/2016 - 18:52:09 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 18:51:07 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 18:51:07 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 18:50:14 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 18:50:14 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 18:46:57 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 18:46:57 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 18:46:57 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 18:45:52 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 18:45:52 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 18:44:55
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لاہور

کوئٹہ کی قانونی برادری کو لاحق خطرات کا ازالہ کیا جائے، تحفظ کو یقینی بنایا جائے ‘ایچ آر سی پی

لاہور ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11 اگست ۔2016ء) پاکستان کمیشن برائے انسانی حقوق (ایچ آر سی پی) نے جمعرات کو کوئٹہ میں ہونے والے بم دھماکے پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے جس میں وفاقی شرعی عدالت کے ایک جج کو نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی۔ کمیشن نے ججوں اور وکلاء کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے فوری کارروائی کا مطالبہ کیاہے۔ایک بیان میں کمیشن نے کہاکہ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ کوئٹہ میں ہونے والا دھماکا، جس میں وفاقی شرعی عدالت کے جج ظہور شاہوانی کو نشانہ بنایا گیا، کوئٹہ کی قانونی برادری کو نشانہ بنائے جانے کا ہی تسلسل تھا’’خوش قسمتی سے وفاقی شرعی عدالت کے جج اس حملے میں محفوظ رہے لیکن دھماکے میں ایک پولیس اہلکار اور عام شہریوں سمیت درجن سے زائد افراد زخمی ہوئے۔

اس دھماکے سے محض چند روز پہلے کوئٹہ میں ہونے والے بم دھماکے میں 70سے زائد افراد ہلاک ہوئے تھے جن میں اکثریت وکلاء کی تھی۔ جمعرات کو ہونے والا دھماکا اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ کوئٹہ کی شعبہ قانون سے تعلق رکھنے والی کمیونٹی غیرمحفوظ ہے۔بلوچستان کے صوبائی دارالحکومت میں جج اور وکلاء تشدد کے بڑھتے ہوئے خوف میں اپنے فرائض آزادانہ اور غیر جانبدارانہ طور پر انجام نہیں دے سکتے اور حتیٰ کہ وہ آزادانہ طور پر نقل و حرکت بھی نہیں کرسکتے۔

ہم پر امید ہیں اور

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

11/08/2016 - 18:46:57 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان