حوثی اور صالح ملیشیائیں پسپا ہو چکی ہیں، عرب اتحاد
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات اگست

مزید بین الاقوامی خبریں

وقت اشاعت: 11/08/2016 - 16:26:59 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 16:26:20 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 15:15:21 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 15:02:24 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 15:02:24 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 15:02:24 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 14:55:44 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 14:52:48 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 14:52:48 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 14:35:16 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 14:35:16
پچھلی خبریں - مزید خبریں

حوثی اور صالح ملیشیائیں پسپا ہو چکی ہیں، عرب اتحاد

ریاض(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11 اگست ۔2016ء) سعودی وزیر دفاع کے مشیر جنرل احمد عسیری نے زور دیا ہے کہ عرب فوجی اتحاد باغیوں کے مقابلے میں یمن کی آئینی حکومت کی سپورٹ جاری رکھے گا، باغیوں کی جانب سے پارلیمنٹ کا اجلاس منعقد کرنے کی دعوت ان ملیشیاں کی ناامیدی اور پریشانی کی عکاسی کرتی ہے۔ایک عرب اخبار کو دیئے گئے انٹرویو میں عسیری کا کہنا تھا کہ یمن میں باغی ملیشیاں کو زمینی طور پر بھاری نقصان کا سامنا کرنا پڑا جہاں ملک کی 80 فی صد اراضی پر آئینی حکومت کا کنٹرول ہے جب کہ مارچ 2015 میں زمینی طور پر اس کا کہیں کنٹرول نہیں تھا۔

جنرل عسیری کے مطابق باغیوں کی جانب سے آئندہ ہفتے کے روز پارلیمنٹ کا اجلاس منعقد کرنے کی دعوت ان کے دیوالیے پن کی دلیل ہے ، وہ یہ سب کچھ کر کے عالمی برادری کو اشارہ دینا چاہتے ہیں کہ وہ یمن میں سیاسی خلا پر کرنے کے خواہش مند ہیں۔انہوں نے واضح کیا کہ سعودی عرب کی اراضی کے اندر سرحدی کارروائیوں کے علاقوں میں میزائل اور راکٹوں کا گرنا، یہ درحقیقت باغی ملیشیاں کی جانب سے ان کاری ضربوں کا ردعمل ہے

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

11/08/2016 - 15:02:24 :وقت اشاعت