طورخم بارڈر پر نیا تعمیر کردہ گیٹ فعال
بند کریں
تازہ ترین ایڈ یشن کے لیے ابھی کلک کریں
جمعرات اگست

مزید اہم خبریں

وقت اشاعت: 11/08/2016 - 13:49:47 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 13:45:38 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 13:45:37 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 13:43:57 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 13:42:56 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 13:41:49 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 13:40:38 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 13:38:22 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 13:36:20 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 13:32:31 وقت اشاعت: 11/08/2016 - 13:30:22
پچھلی خبریں - مزید خبریں

لنڈی کوتل

طورخم بارڈر پر نیا تعمیر کردہ گیٹ فعال

لنڈی کوتل(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11 اگست۔2016ء) پاکستان اور افغانستان کے درمیان طورخم بارڈر پر دونوں اطراف کی آمدورفت کے لیے بغیر کسی افتتاحی تقریب کے تعمیر کردہ گیٹ کو کھول دیا گیا۔ رپورٹ کے مطابق طورخم بارڈر پر تعمیر کردہ گیٹ کو پاکستانی پرچم کے رنگوں سے رنگا گیا ہے، افغانستان سے گاڑیوں کو پاکستان میں داخل ہونے کے لیے صبح 11 بجے طور خم بارڈ کے گیٹ کو کھول دیا گیا۔

دونوں اطراف کے لوگوں کی پیدل آمدورفت کے لیے پیڈسٹرین برج بھی استعمال کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔پاکستان کا افغانستان کے ساتھ سرحد پر 7 مقامات پر گیٹ کی تعمیر کرنے کا منصوبہ ہے، جس میں چترال میں ارندو، بلوچستان میں چمن، قبائلی علاقے باجوڑ میں گروسل ، مہمند ایجنسی میں نوا پاس، کرم ایجنسی میں کلارچی، شمالی وزیر ستان میں غلام خان اور جنوبی وزیر ستان میں انگور اڈہ شامل ہیں۔

گزشتہ ماہ پارلیمانی قائمہ کمیٹی میں اجلاس کے دوران یکم اگست کو طور خم بارڈر کی افتتاحی تقریب منقعد کرنے کا پروگرام بنایا تھا، تاہم بارڈر حکام نے بغیر کسی وجوہات کے آخری لمحوں میں پروگرام کو منسوخ کردیا تھا۔بعدازاں حکام نے 8 اگست کو افتتاحی تقریب کا انعقاد کرنے میں دلچپسی ظاہر کی اور قیاس آرائیاں جاری تھی کہ طور خم پر تعمیر کردہ نئے گیٹ کے افتتاحی تقریب میں اعلیٰ شخصیات شرکت کریں گی۔

حکام کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی خدشات کی بناء پر کوئی باقاعدہ تقریب کا انعقاد نہیں کیا گیا، اس کے علاوہ رواں ہفتے 8 اگست کو کوئٹہ میں بم دھماکے کی وجہ سے بھی ملک سوگ کی کیفیت میں ہے۔پاک۔افغان خم بارڈر پر گیٹ کھولنے کے موقع پر افغانستان میں تعینات پاکستانی سفیر سید ابرار حسین موجود تھے۔پاکستانی سفیر

اس خبر کی تفصیل پڑھنے کیلئے یہاں پر کلک کیجئے

11/08/2016 - 13:41:49 :وقت اشاعت